ایم کیو ایم بندوق کی سیاست نہ کرے تو بات ہو سکتی ہے: عمران

05 فروری 2012
لاہور (سپیشل رپورٹر) تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ ناقص ادویات سے ہونے والی ہلاکتوں کی ذمہ داری پنجاب حکومت پر عائد ہوتی ہے ان کو جوابدہ ہونا پڑے گا جبکہ بلوچستان کا مسئلہ سنگین صورتحال اختیار کر گیا ہے اس کے حل کے لئے اندرون ملک اور بیرون ملک میں بیٹھے بلوچ رہنماﺅں سے بات کرنے کی ضرورت ہے۔ پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ (ن) کے مفادات ایک ہیں، چار سال تک دونوں ایک ساتھ بیٹھے رہے نوازشریف میمو گیٹ ڈرامے پر سپریم کورٹ گئے لیکن اب وہ کدھر ہیں۔ یہ باتیں انہوں نے لاہور ائیر پورٹ پر میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کر تے ہوئے کہیں۔ انہوں نے کہا مسلم لیگ اور پیپلز پارٹی سونامی سے ڈر کے علیحدہ ہو گئے ہیں۔ اختر مینگل سے بات چیت ہوئی ہے۔ بلوچیوں کے احساس محرومی کو ختم کرنے کے لئے کام کریں گے۔ پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ (ن) کے مفادات ایک ہیں یہ چاہتے ہیں کہ کوئی تیسرا ان کا احتساب نہ کرے ، تحریک انصاف کے سونامی کو دیکھتے ہی مسلم لیگ (ن) جو چار سال تک پیپلز پارٹی کے ساتھ تھی وہ علیحدہ ہوئی لیکن میں بتانا چاہتا ہوں کے تمام سیاسی جماعتیں مل بھی جائیں تو وہ تحریک انصاف کے سونامی کو نہیں روک سکتی ہیں ہمارا سونامی ظلم کے نظام کو بہا لے جائے گا۔ جن کی چار سالہ کاکردگی یہ ہے ان کو مزید وقت دے دیا جائے تو کیا ہو گا ان کو وقت نہیں دیا جاسکتا ہے۔ شریف برادران کے بیرون ملک اربوں روپے کے اثاثہ جات ہیں لیکن کبھی بھی یہ اپنے اصل اثاثے ظاہر نہیں کریں گے۔ اے پی اے کے مطابق انہوں نے کہا نوازشریف، صدر زرداری نوراکشتی کر رہے ہیں۔