لاہورمیں ناقص ادویات کے ری ایکشن سے مزید دو مریض جاں بحق ہوگئے جس کے بعد ہلاکتوں کی مجموعی تعداد ایک سو پینتیس ہوگئی ہے۔

05 فروری 2012 (14:37)
پنجاب میں جاری جعلی ادویات کے ری ایکشن سے امراض قلب کے مریضوں کی اموات کا سلسلہ جاری ہے۔آج لاہور کے سروسز ہسپتال میں زیر علاج بھگوان پورہ لاہور کا رہائشی ستر سالہ فیروز دین اور پچپن سالہ فقیر محمد انتقال کرگئے جس کے بعد ہلاکتوںکی مجموعی تعداد ایک سو پینتیس ہوگئی ہے۔دوسری جانب محکمہ صحت کی جانب سے ناقص ادویات کی واپسی اور متبادل ادویات کی فراہمی کا سلسلہ بھی جاری ہے۔ ادھر ہلاکتوں کے ساتھ ساتھ پی۔آئی۔سی میں نئے ایم۔ایس کی تعیناتی کولیکرحکومت اورینگ ڈاکڑز میں محازآرائی کا نیا سلسلہ شروع ہوگیا ہے۔ ینگ ڈاکڑز نے ہفتے کے روز انسٹیوٹ آف کارڈیالوجی میں ایم۔ایس کے کمرے پر قبضہ کرکے نئے ایم۔ایس کی تعییناتی کے فیصلے کو واپس لینے کا مطالبہ کردیا۔ تاہم حکومتی مداخلت کے بعد ایم۔ایس کے کمرے کا قبضہ واپس کردیا گیا۔ دوسری جانب افروز فارما کی ادویات کی تحقیقات کیلئے ڈی۔آئی۔جی ذوالفقار چیمہ پر مشتمل تین رکنی تحقیقاتی ٹیم ہفتے کی شام کراچی پہنچی جہاں اس نے متعلقہ فارما کمپنی کا تمام ریکارڈ قبضے میں لےلیا ہے۔