187 ٹارگٹ کلرز ہمارے حوالے کئے جائیں: رینجرز کا فاروق ستار کو خط

05 اگست 2015

کراچی (نوائے وقت رپورٹ) سندھ رینجرز نے ایم کیو ایم کے رہنما فاروق ستار کو خط لکھ کر مطالبہ کیا ہے کہ 187 ٹارگٹ کلرز رینجرز کے حوالے کئے جائیں۔ رینجرز کے لیفٹیننٹ کرنل حسن اختر کی طرف سے نائن زیرو کے پتے پر بھجوائے گئے خط میں پولیس اہلکاروں کو قتل کرنے والے ملزموں کے نام اور تفصیل درج ہے۔ یہ ملزم 90ء کی دہائی کے آپریشن میں شریک پولیس اہلکاروں کے قتل میں ملوث اور مقدمات میں نامزد ہیں۔ فہرست میں شامل 119 مبینہ ٹارگٹ کلرز ایک، ایک اہلکار کے قتل میں ملوث ہیں جبکہ 47 ٹارگٹ کلرز پر 2، 2 اہلکاروں کے قتل کا الزام ہے۔ فیصل نامی ٹارگٹ کلر 5 پولیس اہلکاروں کے قتل میں نامزد ہے۔ فہرست میں عامر پاپا، آصف چٹا، مجید منجلا، عادل انصاری عرف پگلا، احمد عرف بھورا، وسیم عرف ہولڈر، اصغر چھوٹا، اسلم نک چپٹا، آصف درندہ، جاوید گنجا، منظور بکرا، ندیم مانی، قمر السلام تڑی، رفیق ببلی، ریحان کانا، سعید ڈانسر، شاہد دنبہ، شکیل سرکٹ، ساجد ایل ایم جی، شبیر نائی شامل ہیں۔ خط کی کاپی وزیراعلیٰ سیکرٹریٹ، صوبائی سیکرٹری داخلہ، آئی جی اور ایڈیشنل آئی جی کو بھجوا دی گئی۔ ادھر متحدہ رہنما نے نجی ٹی وی کو بتایا کہ رینجرز کی جانب سے کوئی خط انہیں موصول نہیں ہوا۔ دوسری طرف سندھ رینجرز کے ترجمان نے کہا ہے کہ کچھ شرپسند عناصر سیاسی پارٹیوں کی آڑ میں عسکری ونگ چلانے والے گروہ کراچی آپریشن کی کامیابی اور اسکے نتیجے میں حاصل ہونے والے امن سے گھبرا کر مختلف سازشیں کرنے میں مصرورف ہیں۔ اس ضمن میں یہ ملک دشمن عناصر مختلف شخصیات کے ذریعے عوام میں بے چینی پھیلانے کی کوشش کررہے ہیں۔ یہ سوچی سمجھی سازش کراچی میں امن اور عوام کے خلاف ایک منصوبہ ہے، عوام اور میڈیا سے یہ گزارش ہے کہ وہ قانون نافذ کرنے والے اداروں کے بارے میں پھیلائی ہوئی افواہوں اور غیرمصدقہ معلومات کی تصدیق پاکستان رینجرز (سندھ) سے کریں۔ واضح رہے کہ پاکستان رینجرز (سندھ ) اور کراچی کے پرامن عوام ایسی تمام سازشوں کو پہلے ناکام بناچکے ہیں اورآئندہ بھی بنائیں گے۔ عوام سے گزارش ہے کہ ایسی کسی بھی کوشش کی اطلاع فوری طور پررینجرز ہیلپ لائن 1101پر دیں۔