کراچی: پر تشدد واقعات ‘4 افراد ہلاک‘مقابلے میں 2ڈاکو مارے گئے

05 اگست 2015

کراچی (صباح نیوز+ کرائم رپورٹر) کراچی میں گزشتہ روز تشدد کے مختلف واقعات میں 2 افراد جاں بحق ہوگئے۔ گزشتہ روز اورنگی ٹاون نمبر 10 میں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے ایک شخص جاں بحق ہو گیا۔ مقتول کی شناخت نہیں ہوسکی۔ دوسرے واقعہ میں پورٹ قاسم کے قریب موٹرسائیکل سواروں کی فائرنگ سے نوجوان مشتاق جاں بحق ہو گیا۔ قتل کی وجوہات معلوم نہ ہوسکیں۔ سائٹ کے علاقے میں زہریلی چیز کھانے سے نوجوان رحیم کی حالت بگڑ گئی۔ اسے ہسپتال لے جایا گیا مگر وہ جانبر نہ ہو سکا۔ دوسری طرف رینجرز نے لیاری سے بدنام گینگسٹر ’’عمران کوا‘‘ اور اسکی بھتہ خوری بیوی کو حراست میں لے لیا دونوں نے ایک تاجر سے 5 لاکھ روپے بھتہ طلب کیا تھا۔ دوسری طرف انکشاف ہوا ہے کہ کراچی میں تعینات پولیس کے درجنوں اہلکار سیاسی تنظیموں اور گینگ وار گروپس سے وابستہ ہیں۔ یہ اہلکار گینگسٹرز اور گینگ وار کارندوں کو پولیس کے چھاپوں کی پیشگی اطلاع بھی دیتے ہیں۔ سپیشل برانچ نے رپورٹ مرتب کرلی جس میں 50 سے زائد پولیس اہلکاروں کے نام لئے گئے ہیں۔ ان میں سپاہی سے لیکر ڈی ایس پی رینک کے افسران شامل ہیں۔ انسپکٹر خالد ندیم بیگ لینڈ مافیا کے حضرت خان اور گڈو گروپ کو سپورٹ کرتا ہے۔ چاکیواڑہ تھانے کا اہلکار محمد دین پولیس کے چھاپوں کی خبر گینگ وارکے کارندوں کو دیتا ہے۔ کورنگی سپیشل پارٹی انچارج کانسٹیبل حسن، جنید کی ایرانی پٹرول کی فروخت دیکھتا ہے۔ بلوچ کالونی تھانے کا کانسٹیبل عدیل ایم کیو ایم کیلئے کام کرتا ہے۔ سپیشل برانچ کی رپورٹ کے مطابق ڈی ایس پی سلیم اختر ایم کیو ایم کے ٹارگٹ کلر کامران کاکا کو سپورٹ کرتا ہے۔علاوہ ازیں کراچی کے علاقے گلشن اقبال میں نیپا چورنگی کے قریب مبینہ پولیس مقابلے میں دو ڈاکو ہلاک ہوگئے۔ پولیس کے مطابق ڈاکو شہریوں سے لوٹ مار کررہے تھے۔ دریں اثناء ڈیفنس کے علاقے خیابان شاہین میں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے خاتون دم توڑ گئی جس کی شناخت نہیں ہوسکی۔ منگھو پیر محمد پور میں پولیس مقابلے میں دو جرائم پیشہ افراد کو گرفتار کرلیا گیا۔