یہودی شر پسندوں کا مسجد اقصیٰ پر دھاوا، قبلہ اول کی بیحرمتی

05 اگست 2015

مقبوضہ بیت المقدس (اے این این) انتہا پسند یہودی آباد کاروں کی جانب سے فوج اور پولیس کی سکیورٹی میں قبلہ اول پر دھاوے بولنے کا اشتعال انگیز سلسلہ جاری ہے۔ اطلاعات کے مطابق یہودی شرپسندں کے ایک گروپ نے قبلہ اول میں داخل ہوکر اشتعال انگیز اقدامات کیے۔ فلسطینیوں کے خلاف نعرے بازی کی اور قبلہ اول میں موجود مسجد کے محافظوں کو مشتعل کرنے کے لیے ان پرتشدد کی کوشش کی گئی۔عینی شاہدین نے بتایا کہ یہودی آباد کاروں کا ایک گروپ مسجد اقصی میں داخل ہوا۔ اس گروپ میں کم سے کم 18 یہودی آباد کار شامل تھے۔ ان کے آگے اور پیچھے اسرائیلی پولیس کی باضابط دستے موجود تھے جو فلسطینی شہریوں کو راستے سے ہٹانے کے لیے ان پرتشدد بھی کرتے آرہے تھے۔ عینی شاہدین نے بتایا کہ یہودی شرپسندوں نے قبلہ اول میں داخل ہونے کے بعد تلمودی تعلیمات کے تحت مذہبی رسومات ادا کیں۔ یہودی قبلہ اول کے باب السلسلہ کے باہر کھڑے فلسطینیوں پر حملہ آور ہونے کی کوشش کررہے تھے تاہم اسرائیلی پولیس نے انہیں روک لیا۔ جس کے بعد یہودی شرپسند مراکشی دروازے کے راستے قبلہ اول میں داخل ہوئے اور کئی گھنٹے اندر گھومتے رہے۔