حکومت عوام کو پٹواریوں کے چنگل سے نکالنا چاہتی ہے : ہائیکورٹ

05 اگست 2015

لاہور(وقائع نگار خصوصی) ہائیکورٹ نے پٹواریوں اور ریونیو افسران کے اختیارات میں کمی کے خلاف دائر درخواست پر حکومت پنجاب اور بورڈ آف ریونیو کو نوٹس جاری کرتے ہوئے 14 ستمبر کو جواب طلب کر لیا۔ فاضل عدالت نے ریمارکس دئیے کہ حکومت شہریوں کو پٹواریوں کے چنگل سے نکالنا چاہتی ہے مگر پٹواری مل کر عوام کو اسی نظام کی طرف دھکیلنا چاہتے ہیں۔ درخواست گزار کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ حکومت پنجاب نے لینڈ ریونیو ایکٹ کی شق 42 اے میں ترمیم کے ذریعے پٹواریوں اور ریونیو افسروں کے اختیارات میں کمی کر دی۔ پٹواریوں کے اختیارات کمپیوٹرائزڈ لینڈ سروس سینٹر کے افسروں کو تفویض کر دئیے گئے جو آئین سے متصادم ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس ترمیم کے ذریعے شہریوں کو سروس سینٹر کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا ہے۔ جس پر عدالت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ بادی النظر میں دکھائی دے رہا ہے کہ یہ درخواست پٹواریوں کے کہنے پر دائر کی گئی۔کمپیوٹرائزڈ لینڈ ریکارڈ سے ہی عوام کا مفاد جُڑا ہے۔

EXIT کی تلاش

خدا کو جان دینی ہے۔ جھوٹ لکھنے سے خوف آتا ہے۔ برملا یہ اعتراف کرنے میں لہٰذا ...