پانی کی قلت ملک کیلئے سب سے بڑا ناسورہے،کشن گنگا ڈیم سے دریائے نیلم خشک ہوجائیگا،اولین ترجیح پانی کے مسئلہ کا حل ہے: چیف جسٹس ثاقب نثار

Jun 04, 2018 | 13:06

ویب ڈیسک

اسلام آباد : سپریم کورٹ نے ماحولیاتی آلودگی سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران کالا باغ ڈیم کی تعمیر سے متعلق کیس آئندہ ہفتے سماعت کیلئے مقررکردیا،عدالت نے پانی کی کمی اورڈیمزکی تعمیرسے متعلق دیگرمقدمات بھی مقررکرنے کاحکم دیا ہے۔ چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے قراردیا ہے کہ کراچی کے پانی سے متعلق تمام مقدمات ہفتے کو کراچی رجسٹری میں سنے جائیں گے۔ چیف جسٹس کا ریمارکس میں کہنا تھا کہ پانی کی قلت ملک کیلئے سب سے بڑا ناسورہے،کشن گنگا ڈیم سے دریائے نیلم خشک ہوجائیگا، عدالت نے واپڈا کے سابق چیئرمین شمس الملک اورظفرمحمود کوطلب کرتے ہوئے کہاکہ سابق چیئرمینز پانی کی کمی کے معاملہ میںعدالت کی معاونت کریں، چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ کئی بارکہہ چکاہوں پانی کا مسئلہ انتہائی سنگین ہے، جسٹس سردار طارق مسعود کا کہنا تھا کہ پانی کی قلت اورڈیمز کی تعمیرکسی سیاسی جماعت کی ترجیح نہیں لیکن اگر اپنے بچوں کو پانی نہیں دیا تو کچھ نہیں دیا، اس دوران درخواست گزار بیرسٹر ظفراللہ کا کہنا تھا کہ 20 سال سے کالاباغ ڈیم کیلئے کیس لڑ رہا ہوں ۔ ہرسیاسی جماعت کیلئے الیکشن سے قبل ڈیمز کی تعمیرکاوعدہ لازمی قرار دیا جائے ۔ان کا کہنا تھا کہ الیکشن میں ووٹ کیساتھ کالا باغ ڈیم پرریفرنڈم کی پرچی بھی شامل کی جائے، اس پر چیف جسٹس نے کہاکہ الیکشن کو کنفیوژ نہ کریں پاکستان کی بقا پانی پر منحصر ہے ، پانی کے مسئلہ کے حل کیلئے جو بھی ہوسکا کروں گا۔درخواست گزار کا کہناتھا کہ 48 سال سے ملک میں کوئی ڈیم نہیں بنا چیف جسٹس نے کہاکہ سپریم کورٹ کی اب اولین ترجیح پانی کے مسئلہ کا حل ہے۔

مزیدخبریں