میری وزارت اعلیٰ کے دوران پنجاب کے تعلیمی بجٹ میں 55 فیصد اضافہ ہوا: پرویز الٰہی

04 فروری 2013


 لاہور( خبر نگار) ق لیگ کے سینئر مرکزی رہنماو نائب وزیراعظم چودھری پرویزالٰہی نے کہا ہے کہ تعلیم کے شعبے میں سرمایہ کاری کرنے کا مطلب پاکستان کے مستقبل میںسرمایہ کاری کرنا ہے، جو بھی حکومت تعلیم میںسرمایہ کاری نہیں کرتی وہ پاکستان کا مستقبل روشن نہیں دیکھنا چاہتی، پنجاب میں ہم نے غریبوں کیلئے تعلیم عام کرنے اور تعلیمی معیار بڑھانے پر خصوصی توجہ دی، گداگر اور سپیشل بچوں کو بھی تعلیم کے زیور سے آراستہ کرنے کیلئے خصوصی ادارے بنائے، دل کھول کر سہولتیں اور وظائف دئیے۔ وہ گجرات میں پاکستان مسلم لیگ کے رہنماﺅں و کارکنوں کے بڑے اجتماع سے خطاب کر رہے تھے۔ سابق صوبائی وزیر تعلیم میاں عمران مسعود نے کہا کہ جعلی ڈگری ہولڈروں کی شکست آسمان پر لکھی ہے، ان کے سرپرست حکمران پنجاب میں تعلیم کے فروغ کیلئے چودھری پرویزالٰہی کے اقدامات کے دشمن ہیں۔ چودھری پرویزالٰہی نے تالیوں کی گونج میں بتایا کہ پنجاب میں ان کی وزارت ِ اعلیٰ کے 5 سال کے دوران کیے گئے تعلیمی شعبہ میں اصلاحات اور ”پڑھا لکھا پنجاب پروگرام“ کے تحت اقدامات کی نہ صرف عالمی مدبرین بلکہ بین الاقوامی اداروں نے دل کھول کر تحسین کی۔ انہوں نے بتایا کہ مفت تعلیم، مفت کتابوں، دیگر سہولتوں اور طالبات کیلئے وظائف کی فراہمی سے ہمارے دور میں شرح خواندگی میں 32 فیصد اور پرائمری سطح پر شرح داخلہ میں 155 فیصد سے زائد اضافہ ہوا، خصوصی اور غیر رسمی تعلیم سمیت شعبہ تعلیم کے سالانہ بجٹ میں 55 فیصد اضافہ کیا گیا، 50 ہزار نئے اساتذہ بھرتی کرنے کے علاوہ ان کی تنخواہیں اور مراعات میں سو فیصد اضافہ کیا گیا، راولپنڈی میں ملک کی پہلی خواتین یونیورسٹی، لاہور میں پہلی ویٹرنری یونیورسٹی اور سرکاری شعبہ میں 2 میڈیکل یونیورسٹیوں سمیت صوبہ میں 18 نئی یونیورسٹیاں قائم کی گئیں۔ چودھری پرویز الٰہی نے خصوصی اور گداگر بچوں کیلئے خصوصی تعلیمی اصلاحات کے بارے میں بتایا کہ خصوصی تعلیم کے بجٹ میں 200 فیصد اضافہ کیا گیا، بہاولپور اور لاہور میں ان کیلئے صوبہ کے پہلے ڈگری کالجوں کے علاوہ تعلیم و تربیت کے 119 ادارے قائم کیے گئے۔ میاں عمران مسعود سابق وزیر تعلیم نے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جعلی ڈگری ہولڈروں کی سرپرستی کرنے والے تعلیم کے دشمن ہیں اور یہی وجہ ہے کہ انہوں نے پنجاب میں تعلیم کے فروغ کیلئے کیے گئے چودھری پرویزالٰہی کے اقدامات کو ختم کر دیا۔ اجتماع سے خطاب کرنے والوں میں ذوالفقار پپن، وسیم خالد چن، محمد فیاض، ممتاز احمد، نجیب اشرف چیمہ، عمران وڑائچ، علی ابرار جوڑا، ملک عامر، غلام مرتضیٰ، اکبر حیات جوڑا، ڈاکٹر ارشد، چودھری ذکاءاللہ ڈھلوں، چودھری اجمل حسین، احسان بھٹی، مرزا محمد صدیق اور قاضی احسان بھی شامل تھے۔