زرداری حکومت جمہوریت ڈی ریل کرنے کی کوشش کررہی ہے : شہبازشریف

04 فروری 2013

لاہور (وقت نیوز) وزیر اعلیٰ محمد شہباز شریف نے کہا ہے ان کی جماعت آئندہ عام انتخابات میں ملک کو کرپشن سے پاک کرنے ، قومی وسائل کو بچانے اور سادگی اختیار کرنے کے نعرے پر حصہ لے گی۔ زرداری حکومت نے 65سالہ کرپشن کے ریکارڈ توڑ ڈالے۔ اب یہ جمہوریت کو ڈی ریل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ نئے صوبوں کی تشکیل کے معاملے پر صدر زرداری کی جانب سے بنایا جانے والا کمشن بدنیتی پر مبنی ہے ۔ نیب چوروں کو بچانے کے لئے سرگرم ہے ۔ اپنی مقبولیت میں اضافہ کرانے کے لئے اگر سروے کمپنیوں کو پیسے دیتے ہیں تودوسرے صوبوں میں جن پارٹیوں کی مقبولیت میں اضافہ ہوا کیا انہوں نے بھی پیسے دیے ہیں۔ میٹرو بس سروس پر 30 ارب روپے سے زائد رقم خرچ نہیں ہوئی۔ عوام کو اس سروس کے دوران کرائے کی مد میں خاطر خواہ ریلیف دیں گے۔ وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے ان خیالات کا اظہار وقت نیوز کے پروگرام ان سائیٹ کے میزبان سلیم بخاری کو دیے جانے والے ایک خصوصی انٹرویو میں کیا۔ شہباز شریف نے کہا کہ ان کی جماعت آئندہ عام انتخابات میں اپنی کارکردگی کی بنیاد پر حصہ لے گی۔ ہمارا نعرہ قومی وسائل کو بچانے کے ساتھ ملک سے کرپشن کے کلچر کا خاتمہ اور سادگی اختیار کرنا ہو گا۔ وزیراعلیٰ نے کہا پاکستان کا سب سے بڑا مسئلہ اس وقت بدعنوان حکمران ہیں اور وہ اس بات کو کہنے میں کوئی عار محسوس نہیں کرتے کہ زرداری حکومت نے کرپشن کے معاملے میں گذشتہ 65 برسوں کی تمام بدعنوان حکومتوں کے ریکارڈ توڑ ڈالے ہیں۔ عدالت عالیہ اور عظمیٰ کے احکامات پر عمل نہیں کیا جا رہا۔ قومی خزانے اور وسائل کو دونوں ہاتھوں سے اس طرح لوٹا گیا ہے کہ ایک شخص صرف ایک محکمے سے 82ارب روپے لے کر ملک سے اپنے اہلخانہ کے ہمراہ فرار ہو جاتا ہے اور کوئی پوچھنے والا نہیں۔ بینک آف پنجاب سمیت کرپشن کے ہر معاملے پر نیب جیسا ادارہ چوروں کے ساتھ ملی بھگت کرنے میں مصروف ہے ۔ انہوں نے کہا ایسے حالات میں صرف میاں نواز شریف ہی امید کی وہ واحد کرن ہیں جو قوم کو مسائل سے نکال سکتے ہیں۔ وزیراعلیٰ نے کہا ان کی جماعت سندھ اور خیبر پی کے میں اپنے اتحادیوں کے ساتھ مل کر آئندہ عام انتخابات میں حصہ لے گی لیکن خوش آئند اور اطمینان بخش بات ہے پاکستانی قوم اب وسائل کی لوٹ مار کرنے والوں کو پہچان چکی ہے ۔ وزیراعلیٰ نے کہا وہ غیرملکی امداد کے بجائے اپنے وسائل پر انحصار کرنے پر یقین رکھتے ہیں اور ملک کو موجودہ بحرانی صورتحال سے نکالنے کے لئے قوم کو ٹیکس ادا کرنا ہو گا۔ جبکہ قیادت کو عالمی برادری اور قوم کے سامنے اپنے اعتبار اور اعتماد کا امیج بہتر کرنا ہو گا۔ وزیراعلیٰ نے کہا اس وقت جہاں غیرملکی سرمایہ کار اسلام آباد آتے ہوئے اپنی جیبیں بچا رہے ہوتے ہیں وہیں انہوں نے پنجاب میں اربوں روپوں کی سرمایہ کاری کی ۔ خواہ اس کا تعلق میٹرو بس سروس سے ہو یا بجلی سے۔ ان کا کہنا تھا اس وقت پنجاب حکومت اور جرمنی کے درمیان بجلی کی پیداوار کے حوالے سے معاملات طے پا چکے ہیں جبکہ برطانوی فرم ڈیفنڈ دنیا بھر میں پنجاب میں شروع کئے جانے والے اپنے منصوبوں کی مثالیں دے رہی ہے ۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا مسلم لیگ ن کی قیادت سیاسی انتقام پر قطعی یقین نہیں رکھتی۔ ان کے حالیہ دور حکومت میں گذشتہ پانچ برسوں کے دوران کسی بھی ایک فرد پر سیاسی بنیاد پر مقدمہ قائم نہیں کیا گیا۔ ان پر عوامی سروے کی مقبولیت کے حوالے سے الزامات لگانے والے بتائیں کیا ان سروے میں جن دوسرے صوبوں میں دیگر جماعتوں کی مقبولیت کے اضافے کی بات کی گئی ہے کیا انہوں نے بھی ان سروے کمپنیوں کو پیسے لگائے تھے۔ وزیراعلیٰ صوبے میں نئے صوبوں کے قیام کے حوالے سے نہ صرف بولے بلکہ انہوں نے صدر زرداری پر الزام لگایا انہوں نے انتخابات سے قبل یہ ایک سیاسی تماشا شروع کیا ہے مگر جنوبی پنجاب کے عوام اور ریاست بہاولپور کے شہری ان کے عزائم کو اچھی طرح جانتے ہیں۔ شہباز شریف نے کہا جس وقت پورا جنوبی پنجاب ہولناک سیلاب میں ڈوبا ہوا تھا صدر زرداری لندن اور پیرس کی ٹھنڈی ہواﺅں کے مزے لے رہے تھے۔ بہاولپور کے عوام نے اپنی ریاست کی بحالی کے لئے بے شمار قربانیاں دی ہیں جبکہ 12اپریل 2012ءکو پنجاب اسمبلی سے منظور ہونے والی دو قراردادوں میں اس معاملے پر بھی روائتی ڈنڈی مارتے ہوئے اسے بی جے پی بنا دیا اور ایسے لوگ نئے صوبوں کے قیام کے لئے تشکیل دیے گئے کمشن میں ڈالے جو پنجاب سے کونسلر کی سیٹ نہیں جیت سکتے اور بدنصیبی یہ کہ زرداری صاحب نے اپنے سٹاف آفیسر کو اس کمشن کا سربراہ بنا دیا۔ وزیراعلیٰ کا کہنا تھا زرداری کا تجویز کردہ بی جے پی اب بھارتیہ جنتا پارٹی بن چکا ہے ۔ اور کوئی بھی اسے سنجیدگی سے لینے کو تیار نہیں۔ وزیراعلیٰ نے اس موقع پر لاہور میں بننے والے میٹرو بس منصوبے کو بھی اپنی حکومت کا شاندار منصوبہ قرار دیتے ہوئے اسے پاکستان کا منصوبہ کہا۔ ان کا کہنا تھا اس منصوبے پر 30ارب روپے کی لاگت آئی ہے اور یہ جس ریکارڈ مدت میں مکمل ہوا ہے ماضی میں اس کی مثال نہیں ملتی۔ وزیراعلیٰ کا کہنا تھا اس منصوبے کی تکمیل پر وہ ترک حکومت اور ان کے ماہرین کے بھی خصوصی طور پر شکر گزار ہیں۔ منصوبے کو کامیاب بنانے کے لئے اس کی تکنیک سے لے کر بسوں تک کو پرائیویٹ سیکٹر کردیا گیا ہے ۔ اس کی دیکھ بھال کے لئے خصوصی کمیٹی قائم کی گئی ہے جبکہ اس سلسلے میں اسے آئینی اور قانونی تحفظ فراہم کرنے کے لئے اتھارٹی کا بل صوبائی اسمبلی سے منظور کرایا گیا ہے ۔ شہباز شریف نے کہا حکومت میٹرو بس سروس کو عام آدمی کی ٹرانسپورٹ بنائے گی اور وہ خود بھی اس میں سفر کریں گے۔ وزیراعلیٰ کا کہنا تھا اس کے کرائے کی مد میں خصوصی سبسڈی دی جائے گی جبکہ اس منصوبے پر اعتراض کرنے والے وہ لوگ ہیں جو بلٹ پروف گاڑیوں اور جہازوں پر سفر کرتے ہیں۔ ایک سوال کے جواب میں وزیراعلیٰ کا کہنا تھا ان کی حکومت ڈینگی کے بعد اب خسرے کے تدارک کے لئے بھی خصوصی انتظامات کر رہی ہے ۔ وزیراعلیٰ نے اس موقع پر کچھ سوالات کا ہلکے پھلکے انداز میں جواب دیا۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا میں نے آئندہ انتخابات کے بعد وفاقی وزیر پانی و بجلی بننے کا ارادہ ظاہر کیا ہے جبکہ اس سوال پر کہ پھر صوبے کا وزیراعلیٰ کون ہو گا شہباز شریف کا کہنا تھا دنیا میں کوئی شخص بھی حتمی نہیں ہر آدمی نے اپنی اننگز کھیل کر جانا ہوتا ہے ۔ صوبائی حکومت کی کفایت شعاری مہم پر بات کرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کہا وہ پارٹی ورکرز اور سرکاری افسران کو کھانے میں دال چاول کھلاتے ہیں جبکہ کبھی کبھی انہیں آلو گوشت بھی کھلا دیا جاتا ہے ۔ مگر جو دوسرے کھاتے ہیں سرکاری محافل میں شہباز شریف کا کہنا تھا وہ بھی وہی کھاتے ہیں۔ انٹرویو کے دوران شہباز شریف اپنے روائتی حریفوں کو بابا اور چالیس چوروں کے بجائے بھارتیہ جنتا پارٹی کہہ کر پکارتے رہے۔ لاہور (خبرنگار) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے کہا ہے میٹرو بس سروس ملک کی تاریخ کا منفرد اور اچھوتا منصوبہ ہے ۔ اس عظیم الشان منصوبے سے پبلک ٹرانسپورٹ سسٹم میں بہتری آئے گی اور عوام کا طرز سفر بدلے گا۔ میں خود، صوبائی وزرائ، ارکان اسمبلی، ملازمین، مزدور اور عام آدمی میٹرو بس میں سفر کریں گے۔ میٹرو بس سروس کے منصوبے سے شہریوں کو آرام دہ، باکفایت اور محفوظ سفری سہولیات میسر آئیں گی۔ دنیا کے کئی ممالک میں میٹرو بس کا جدید نظام موجود ہے تاہم پاکستان کا میٹرو بس سسٹم معیار، شفافیت اور تیز رفتاری کے لحاظ سے سب سے بہتر ہے ۔ وہ گزشتہ روز ٹاﺅن شپ میں نجی ٹی وی کے رپورٹر عاصم نصیر کی شادی کے موقع پر میڈیا سے بات چیت کر رہے تھے۔ وزیراعلیٰ نے میڈیا سے کہا 10 فروری کو میٹرو بس سروس کاافتتاح عوام کیلئے خوشیاں اور راحتیں لائے گا۔ پنجاب حکومت نے انتہائی کم لاگت اور ریکارڈ مدت میں یہ منصوبہ مکمل کیا ہے اور پاکستان کی 65 برس کی تاریخ کے دوران یہ اپنی طرز کا منفرد سفری نظام عوام کیلئے بنایا گیا ہے ۔ ایک سوال کے جواب میں وزیراعلیٰ نے کہا قومی مفاد پر پوری قوم کو متحد ہونا چاہیئے اور قومی مفاد کیلئے پوری قوم کا ایک ہی ایجنڈا ہونا چاہیئے۔ عام انتخابات سے قبل انتخابی اتحاد کے بارے میں وزیراعلیٰ نے کہا جماعت اسلامی، جمعیت علماءاسلام، جمعیت علماءپاکستان اور دیگر سیاسی جماعتوں سے بات چیت کا عمل جاری ہے ۔ انتخابات سے قبل گورنروں کی تبدیلی کے بارے میں انہوں نے کہا شفاف، آزادانہ اور منصفانہ انتخابات کے انعقاد کیلئے ہرممکن اقدامات اٹھائے جانے چاہئیں۔ انہوں نے کہا انتخابات کے انعقاد سے قبل صوبائی گورنروں کی تبدیلی کے بارے میں قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر چوہدری نثار علی خان نے واضح بیان دیا ہے ۔ عام انتخابات کا بروقت انعقاد ملک کی سا لمیت اور استحکام کیلئے نہایت ضروری ہے ۔ وزیراعلیٰ نے گذشتہ روز 3 گھنٹے تک بارش کے دوران میٹرو بس پراجیکٹ کا بغیر سکیورٹی اور پروٹوکول دورہ کیا۔ انہوں نے شاہدرہ سے دورے کا آغاز کرتے ہوئے اتفاق بس سٹیشن تک کام کا جائزہ لیا۔ وزیراعلیٰ نے میٹرو بس پراجیکٹ کے دورے کے موقع پر مختلف مقامات پر جمع ہونے والے لوگوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا پنجاب حکومت نے 30 ارب روپے کی لاگت سے ریکارڈ مدت میں پاکستان کی تاریخ کا سب سے بڑا منصوبہ مکمل کرکے نئی تاریخ رقم کی ہے۔ زرداری اور اس کے حواریوں نے گزشتہ پونے پانچ برسوں میں صرف قومی وسائل پر ہاتھ صاف کئے ہیںاور اپنی جیبیں بھری ہیں جبکہ مسلم لیگ (ن) کی پنجاب حکومت نے ترقیاتی کاموں کے ریکارڈ قائم کئے ہیں۔ انہوں نے کہا زرداری اور اس کے حواری 200 ارب روپے خرچ کرکے بھی ایسا منصوبہ کبھی مکمل نہیں کرسکتے تھے کیونکہ اس کرپٹ ٹولے کا مطمع نظر صرف لوٹ مار ہی رہا ہے ۔ انہوں نے کہا میٹرو بس پراجیکٹ کا افتتاح 10 فروری کو کیا جا رہا ہے اس منصوبے پر کام کرنے والے انجینئرز کو سرٹیفکیٹس اور مزدوروں کو انعامات دیں گے۔ وزیراعلیٰ نے اپنے دورے کا آغاز شاہدرہ سے کیا اور ہر بس سٹیشن پر رک کر کام کی رفتار کا جائزہ لیا۔ انہو ںنے زیرتعمیر کلمہ چوک انڈر پاسز کا بھی معائنہ کیا۔ وہ مزدوروں اور شہریوں سے مصافحہ کرتے رہے اور ان سے میٹرو بس کے کرائے کے تعین کے بارے میں بھی پوچھتے رہے۔شہریوں نے اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا پاکستان کی تاریخ کے تمام بڑے منصوبے مسلم لیگ (ن) کے دور حکومت میں ہی مکمل ہوئے ہیں۔ یقین نہیں آتا میٹرو بس کا اتنابڑا منصوبہ اتنی جلد ی مکمل ہوسکتاہے۔ میٹرو بس کا عظیم الشان منصوبہ شہباز شریف کا کارنامہ ہے جسے ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔ انہوں نے کہا ہم نے ایسے تاریخی منصوبے کے بارے میں کبھی سوچا بھی نہ تھا۔ ہمیں عوام کا یہ فلاحی منصوبہ دیکھ کر بے حد خوشی ہو رہی ہے ۔ منصوبے پر کام کرنے والے مزدور وزیراعلیٰ کو اپنے درمیان پا کر بے حد خوش تھے۔ ان کا کہنا تھا کہ ہم تصور بھی نہیں کرسکتے تھے کہ شہباز شریف اس طرح مزدوروں سے آ کر ملیں گے، ہاتھ ملائیں گے اور حوصلہ افزائی کریں گے۔ ماڈل ٹاﺅن میں اعلی سطح کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کہا لاہورا ور گوجرانوالہ میں کھانسی کا شربت پینے سے انسانی جانوں کا ضیاع انتہائی افسوسناک ہے ، پنجاب حکومت ان واقعات کے ذمہ داروں کے خلاف سخت کارروائی کرے گی اور ان واقعات میں مجرمانہ غفلت کے مرتکب افراد کو سلاخوں کے پیچھے ہونا چاہیئے۔ ایک ایک انسانی جان قیمتی ہے ۔انسانی جانوں کا تحفظ ہم سب کی ذمہ داری ہے ۔ میں اللہ اور عوام کی عدالت میں جوابدہ ہوں۔ لاہور میں ہونے والے واقعہ پر متعلقہ حکام اپنے فرائض صحیح طریقے سے ادا کرتے تو گوجرانوالہ کے واقعات کو روکا جاسکتا تھا۔ اس موقع پر کھانسی کے سیرپ کیس پر ہونے والی پیش رفت کاجائزہ لیاگیا۔ وزیراعلیٰ نے کھانسی سیرپ کیس کی کریمنل انویسٹی گیشن کا حکم دیتے ہوئے کہا کریمنل انویسٹی گیشن کے لئے فوری طورپر کمیٹی تشکیل دی جائے اور کمیٹی میں محکمہ پولیس کے قابل آفیسرز کے ساتھ ماہرین کو بھی شامل کیا جائے ۔انہوں نے کہا جو سرکاری اہلکار اس کیس میں غفلت کے مرتکب پائے گئے ہیں ان کے خلاف محکمانہ کارروائی بھی عمل میں لائی جائے گی۔ علاوہ ازیں ماڈل ٹاﺅن میں مختلف یونیورسٹیوں کے طلبہ و طالبات پر مشتمل انٹرنیشنل جرنلزم کانفرنس آرگنائزنگ کمیٹی کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعلی نے کہا پاکستان کی نوجوان نسل ٹیلنٹ میں کسی سے پیچھے نہیں قومی وسائل کو صحیح سمت میں استعمال کیا جائے تو یہ مٹی بہت زرخیز ہونے کا عملی ثبوت مہیا کر سکتی ہے ۔ انہوں نے کہا گزشتہ 65 برسوں سے ہم عملی میدان میں وہ کچھ نہیں کر سکے جو وقت کا تقاضا تھا لیکن ان حالات میں بھی ہمیں مایوس ہونے کی بجائے پرامید رہنا ہے ۔ بھرپور صلاحیتوں سے مالا مال پاکستان کے نوجوان ہی ملک کے مستقبل کو سنواریں گے۔ نوائے وقت نیوز کے مطابق وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے کہا ہے کہ آئندہ الیکشن میں انتخابی اتحاد کےلئے مختلف جماعتوں سے بات چیت چل رہی ہے ۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی، فنکشنل لیگ، جے یو آئی اور سندھ کی قوم پرست جماعتوں سے اتحاد کے لئے بات چیت چل رہی ہے ۔ آزادانہ ،غیر جانبدارانہ اور شفاف انتخابات کےلئے گورنروں کی تبدیلی سمیت جو کچھ ہو سکتا ہے کرنا چاہئے۔ طاہرالقادری کی پاکستان آمد سے متعلق ایک سوال کے جواب میں وزیر اعلیٰ نے کہا کسی کے آنے یا جانے کی بات نہیں۔ ہمیں قومی مفاد کو ہر چیز پر فوقیت دینی چاہئے۔ نگران وزیر اعظم کا نام اگر آج ہی بتا دیا تو پھر کل کیا بتا¶نگا۔ وزیر اعلیٰ نے میٹروبس پراجیکٹ کو عالمی معیار کا منصوبہ قرار دیا۔