ایوان عدل میں مسجد کے صحن کی جگہ پر بااثر وکلاءکی آشیرباد سے تجاوزات قائم

03 ستمبر 2010
لاہور (رپورٹ: ایف ایچ شہزاد) ایوان عدل میں مسجد کے صحن کی جگہ پر تجاوزات قائم ہو گئیں جس سے ججوں، وکلاءاور عدالتی عملے کو نماز اور خصوصاً نماز جمعہ کی ادائیگی میں مشکلات پیش آرہی ہیں جبکہ مسجد کا عقبی جنگلا توڑ کر اللہ دتہ نامی شخص نے کھانے کا سٹال قائم کر لیا ہے۔ سابق گارڈین جج خالد نواز نے مسجد کے صحن کی حد بندی کرواتے ہوئے نماز کی ادائیگی کےلئے صفوں کے مطابق لائنیں لگوائی تھیں ۔مگر قبضہ مافیا نے کسی ٹھیکے کے بغیر بااثر وکلاءکی اشیرآباد سے حد بندی کے اندر فوٹو سٹیٹ مشینوں اور کھانے کے سٹال قائم کر لئے ہیں۔ عدالتی ذرائع نے نوائے وقت کو بتایا کہ بغیر ٹھیکہ کے یہ تجاوزات نہ صرف مسجد کےلئے مخصوص جگہ پر قائم ہیں بلکہ ان سٹالوں پر حکومت کی بجلی استعمال ہو رہی ہے اور سرکاری خزانے کو نقصان پہنچایا جا رہا ہے۔ اس بارے مےں رابطہ کرنے پر لاہور بار کے اعلیٰ ذرائع نے تجاوزات کی تصدیق کرتے ہو ئے کہا کہ بہت جلد آپریشن کلین اپ کیا جائے گا۔وکلائ،سائلین اور عدالتی اہلکاروں سمیت ایوان عدل میں نماز کےلئے آنے والوں نے چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ سے آپریشن کلین اپ کروانے کی اپیل کی ہے۔