A PHP Error was encountered

Severity: Notice

Message: Undefined index: category_data

Filename: frontend_ver3/Templating_engine.php

Line Number: 35

خونیں انقلاب تیزی سے بڑھ رہا ہے‘ ناانصافی کا خاتمہ کرنا ہوگا : شہبازشریف

03 ستمبر 2010
لاہور (خبرنگار خصوصی + مانیٹرنگ ڈیسک) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ لاہور میں دہشت گردی کے افسوسناک واقعہ کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے۔ کوئی بھی مسلمان مقدس مہینے میں اس طرح کی بربریت اور دہشت گردی کا سوچ بھی نہیں سکتا۔ انتظامی انتظامات کےلئے خود اعلیٰ سطح اجلاس طلب کر کے پولیس اور انتظامیہ کو مﺅثر حفاظتی انتظامات کی ہدایت کی تھی جس پر کافی حد تک عمل کیا گیا لیکن لگتا ہے کہ انتظامات میں کچھ کمی رہ گئی ہو۔ خونی انقلاب تیزی سے بڑھ رہا ہے آج ہم نے اپنے اطوار نہ بدلے تو سکھر سے لوگ کراچی اور مظفرگڑھ سے لاہور تک احتجاج کرینگے۔ ناانصافی کا خاتمہ کرنا ہوگا ۔ خودکش بمبار سابق حکومت کی پیداوار ہیں دہشت گردی کے ناسور کا مقابلہ کرنا ہوگا ۔ جب تک اس کی مکمل بیخ کنی نہ کر لیں پاکستان ترقی و خوشحالی کی منزل حاصل نہیں کر سکتا۔ وزیراعظم سمیت تمام حکمران شاہ خرچیاں چھوڑ کر سادگی اپنائیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز میڈیا کے نمائندہ سے گفتگو، نجی ٹی وی سے بات چیت کرتے ہوئے کہا وزیراعلیٰ نے گنگارام ہسپتال کا دورہ کیا اور کربلا گامے شاہ بم دھماکے میں زخمی ہونے والوں کی عیادت کی وہ فرداً فرداً ہر زخمی کے پاس گئے اور ان کی خیریت دریافت کی۔ اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کہا کہ لاہور میں دہشت گردی کے افسوسناک واقعہ میں بہت سی معصوم جانیں ضائع ہوئیں۔ دہشت گردی کا واقعہ درندگی کی بدترین مثال ہے جس سے کروڑوں پاکستانی غمزدہ ہیں۔ پوری قوم دہشت گردی کے خلاف جنگ میں متحد ہے اور ہم پرعزم ہےں کہ جب تک اس لعنت سے چھٹکارا حاصل نہیں کر لیتے چین سے نہیں بیٹھیں گے۔ ایک طرف پاکستان کے عوام کو سیلاب کی تباہ کاریوں کا سامنا ہے اور دوسری طرف دہشت گرد غیروں سے مل کر معصوم زندگیوں سے کھیل رہے ہیں۔ اگر آج ہم نے دکھی انسانیت کا ہاتھ نہ تھاما تو انتہا پسندی میں اضافے کا خدشہ ہے اس لئے ہمیں سادگی اپناتے ہوئے اپنے چال چلن کو بدلنا ہوگا ۔ لاہور میں ہونے والے واقعہ کی انکوائری کرائی جارہی ہے۔ ہوم سیکرٹری اور ایڈیشنل آئی جی سپیشل برانچ کو بھی فوری طور پر تبدیل کر دیا گیا ہے۔ قبل ازیں وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کی زیرصدارت امن و امان کے حوالے سے اعلیٰ سطحی اجلاس منعقد ہوا۔ جس میں لاہور میں ہونے والے افسوسناک واقعہ کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔ وزیراعلیٰ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ معصوم نوجوانوں، بزرگوں اور خواتین اور بچوں کے خون سے ہاتھ رنگنے والے انسانیت اور اسلام دونوں کے دشمن ہیں۔ موجودہ حالات میں امن و امان سے بڑھ کر اور کوئی ترجیح نہیں ہو سکتی۔ جمعة الوداع کے موقع پر امام بارگاہوں، مساجد اور دیگر عبادت گاہوں میں سکیورٹی کے فول پروف انتظامات کئے جائیں۔ عیدالفطر کے موقع پر سکیورٹی انتظامات کے حوالے سے پلان آئندہ دو روز میں پیش کیا جائے۔ اجلاس میں متعدد فیصلے کئے گئے اور انتظامی مشینری کو باور کرایا گیا کہ دہشت گردی تخریب کاری کے رجحان کے خاتمہ کےلئے ممکنہ اقدامات بروئے کار لائے جائیں اور مانیٹرنگ کو مﺅثر اور نتیجہ خیز بنایا جائے۔ اجلاس میں وزیر قانون رانا ثناءاللہ آئی جی طارق سلیم ڈوگر کمشنر ڈی سی او سمیت دیگر حکام نے شرکت کی۔ نجی ٹی سے گفتگو کرتے ہوئے شہباز شریف نے کہا کہ دہشت گردی نے پاکستان کی بنیادیں ہلا دی ہیں۔ خودکش بمباری راتوں رات ختم نہیں ہوگی۔ دہشت گردی کرنے والے مسلمان، انسان اور پاکستانی نہیں ہیں۔ خودکش بمبار روکنے کےلئے خود کو تیار کرنا ہوگا ۔ سیلاب متاثرین کی امداد اور بحالی نہ کی گئی تو سماجی بحران پیدا ہوگا ۔