5خود کشیاں، لاہور میں غربت سے تنگ 2بچوں کے باپ نے زندگی ختم کر لی

03 مئی 2014

لاہور (نامہ نگاران) لاہور، قصور، کامونکے فیروزوالا اور فیصل آباد میں 2خواتین سمیت 5افراد نے زندگی کا خاتمہ کر لیا۔ تفصیلات کے مطابق لاہور میں شاہدرہ کے علاقہ میں غربت و بے روزگاری سے دلبرداشتہ ہو کر دو بچوں کے باپ نے زندگی ختم کر لی ہے۔ بیگم کوٹ کا اقبال کافی عرصہ سے بے روزگار تھا جبکہ اس کے گھر میں فاقوں تک نوبت پہنچ گئی تھی جس وجہ سے وہ بہت پریشان تھا جس پر گذشتہ روز دلبرداشتہ ہو کر زہریلی گولیاں کھا لیں۔ حالت غیر ہونے پر اسے ہسپتال پہنچایا گیا مگر وہ جانبر نہ ہو سکا اور اس نے دم توڑ دیا۔ پولیس کے مطابق لواحقین نے کسی بھی قسم کی قانونی کارروائی کروانے سے انکار کر دیا ہے جس وجہ سے نعش ضروری کارروائی کے بعد ورثاء کے حوالے کر دی گئی ہے۔ قصور میں چھانگا مانگا کے نواح میں ایک شخص قاسم جس کا ذہنی توازن درست نہیں تھا نے نہر میں چھلانگ لگا کر اپنی زندگی کا خاتمہ کر لیا۔ قاسم بی ایس لنک کے کنارے  چل پھر رہا تھا۔ اسی اثناء میں اس نے نہر میں چھلانگ لگا دی جس کے نتیجہ میں وہ ڈوب کر جاں بحق ہو گیا۔  کامونکے میں  گھریلو ناچاقی سے دلبرداشتہ شادی شدہ خاتون نے زہریلی گولیاں نگل کر اپنی زندگی کا خاتمہ کر لیا۔ محلہ حبیب پورہ کی چالیس سالہ ساجدہ بی بی کا اپنے خاوند منصور احمد سے اکثر لڑائی جھگڑا رہتا تھا گذشتہ روز لڑائی جھگڑے کے بعد اس نے زہریلی گولیاں نگل لیں جسے تشویش ناک حالت کے پیش نظر فوری میو ہسپتال لے جایا گیا تاہم وہ جانبر نہ ہوسکی۔ فیروز والا شاہدرہ میں اٹھارہ سالہ نوجوان راحیل نے زہریلی گولیاں کھا لیں جس کی حالت غیر ہونے پر ہسپتال لایا گیا جہاں پر وہ دم توڑ گیا۔ پولیس نے متوفی کی نعش ضروری کارروائی کے بعد ورثاء کے حوالے کر دی۔ نوجوان کی خود کشی کرنے کی وجہ معلوم نہ ہو سکی۔ فیصل آباد سے نمائندہ خصوصی کے مطابق لڑکی نے گھریلو جھگڑے پر خود کشی کر لی۔ ہسپتال میں انتظامیہ نے ضروری کارروائی کے بعد نعش ورثاء کے حوالے کر دی۔ فیصل آباد کے نواحی علاقہ 105گ۔ب کے محمد اسلم کی 16سالہ بیٹی ردا نے والدہ سے جھگڑ کر گندم میں رکھنے والی گولیاں نگل لی تھیں جسے ہسپتال لایا گیا مگر وہ چل بسی۔