جسم میں ٹریکر لگانے کا الزام لگانے والی خاتون کا ہائیکورٹ سے رجوع کا فیصلہ

03 مئی 2014

لاہور (اپنے نامہ نگار سے) شوہر کی جانب سے جاسوسی کے لئے جسم میں ٹریکر لگانے کے الزام میں شوہر سمیت 5افراد کے خلاف خاتون نے ہائی کورٹ سے رجوع کرنے کا فیصلہ کر لیا۔ خاتون کی طرف سے سیشن کورٹ میں دائر اندراج مقدمہ کی درخواست خارج کئے جانے پر گذشتہ روز صغریٰ بی بی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا انہوں نے فیصلہ کی نقل حاصل کرنے کے بعد انصاف کے لئے ہائی کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹانا ہے۔ سیشن کورٹ نے ناکافی ثبوت کی بناء پر اور الٹرا سائونڈ رپورٹ بھی مصدقہ نہ ہونے پر  دائر اندراج مقدمہ کی درخواست خارج کی۔ فاضل عدالت میں  پویس کی جانب سے موقف اختیار کیا درخواست گزار خاتون کا کردار ٹھیک نہیں ہے جس کی محلے سے بھی تصدیق ہوئی ہے۔ سائلہ بھی عدالت میں پیٹ میں نصب کئے گئے ٹریکر کے حوالے سے ثبوت فراہم نہیں کرسکی ہے جبکہ الٹراسائونڈ رپورٹ بھی تصدیق شدہ نہیں تھی۔ عدالت میں درخواست گزار  خاتون کا سابق شوہر بھی سامنے آ گیا۔ سابق شوہر فیاض نے عدالت میں موقف اختیار کیا اس نے19سال قبل صغراں سے شادی کی تھی اور 9سال قبل اسے طلاق دے دی۔