اسامہ کی موجودگی کئی سوال چھوڑ گئی، الظواہری القاعدہ کے سربراہ ہو سکتے ہیں

03 مئی 2011
اسلام آباد (جاوید صدیق/ عترت جعفری/ شاہین سکندر) اسامہ بن لادن کے بعد ایمن الظواہری القاعدہ کے سربراہ بن سکتے ہیں۔ اسامہ کے جاںبحق ہونے کے بعد القاعدہ کے مستقبل کے بارے میں قیاس آرائیاں شروع ہو گئی ہیں۔ ماہرین کا کہنا ہے اسامہ کا مشن ختم نہیں ہو گا۔ ایبٹ آباد میں اسامہ کی موجودگی لاتعداد سوالات چھوڑ گئی ۔ جاوید صدیق کی رپورٹ کے مطابق اسامہ بن لادن کے بعد ایمن الظواہری القاعدہ کے سربراہ بن سکتے ہیں۔ تجزیہ کاروں کے خیال میں ایمن الظواہری اسامہ بن لادن کے استاد مانے جاتے ہیں۔ ایمن الظواہری القاعدہ کے چیف آرگنائزر سمجھے جاتے ہیں۔ ایمن الظواہری اور اسامہ بن کی ملاقات 80کی دہائی میں افغانستان میں ہوئی تھی جب دونوں سوویت یونین کے خلاف جہاد کے لئے افغانستان منتقل ہوئے تھے۔ عترت جعفری کی رپورٹ کے مطابق القاعدہ کے سربراہ اسامہ بن لادن کی موت اب حقیقت بن گئی ہے تاہم جن حالات میں ان کی موت ہوئی اور اس بارے میں اب تک ذرائع ابلاغ کے ذریعے جو کچھ منظرعام پر آرہا ہے وہ ایک عام انسان کے ذہن میں لاتعداد سوالات پیدا کرنے کے لئے کافی ہے۔ حیرت کی بات یہ ہے کہ دنیا کی سپر پاور سمیت تمام ایلیٹ انٹیلی جنس ایجنسیوں کے لئے ایک سائے کی صورت اختیار کرنے والا شخص ایبٹ آباد کے ایک عام گھر میں آکر رہنے کے لئے کیسے آمادہ ہو گیا تھا۔ اسامہ بن لادن کی سرگرمیوں کی اب تک جتنے فوٹیج سامنے آئے تھے ان میں وہ انتہائی جدید اسلحہ اور مواصلاتی نظام سے لیس محافظوں کے جھرمٹ میں دکھائے دیتے تھے یہ عجب سی بات ہے کہ وہ پاکستان آتے ہیں اور اپنے حفاظتی اقدامات سے لاتعلق ہو جاتے ہیں اور ان کے درجنوں محافظ کہیں دکھائی نہیں دیتے۔ یہ بھی حیرت ناک بات نظر آتی ہے کہ دنیا کے مانے جانے والے سراغ رسانوں کو چکرا دینے والے شخص نے اس بات کو نظر انداز کر دیا تھا کہ اس کا تعاقب کیا جا رہا ہے اور اس کا گھیرا¶ کسی بھی وقت ممکن ہے اور وہ ہنگامی لمحات میں ”ایگزٹ“ کے راستہ کے سوال کو نظر انداز کر رہا تھا اور پہلے ہیلی کاپٹر کی آمد کے بعد بھی اس نے نکلنے کی کوشش نہیں کی اسامہ بن لادن نے گھر میں نہ کوئی محافظ رکھا نہ اسلحہ اور نہ ہی فرار کا کوئی انتظام۔ اسامہ بن لادن کو ایبٹ آباد کے گھر تک لائے جانے کی اصل کہانی تو شاید اب بھی سامنے نہیں آسکے گی تاہم ان کی موت دہشت گردی کے خلاف جنگ پر کس انداز میں اثر انداز ہوگی یہ آنے والا وقت ہی بتائے گا۔ شاہین سکندر کی رپورٹ کے مطابق ایبٹ آباد میں امریکی فوج کے آپریشن کے دوران اسامہ بن لادن کے جاں بحق ہونے کا واقعہ کئی اہم سوالات چھوڑ گیا۔ ایبٹ آباد پاک فوج کا ایک مضبوط گڑھ تصور کیا جاتا ہے یہاں پچھلے 5 سال سے اسامہ کی موجودگی سکیورٹی ایجنسیوں کے منہ پر بڑا تھپڑ ہے۔
سوال