ق لیگ کی حکومت میں شمولیت‘ رضا ربانی نے احتجاجاً استعفیٰ صدر کو پیش کر دیا

03 مئی 2011
اسلام آباد (آن لائن) وفاقی وزیر برائے بین الصوبائی رابطہ اور 18ویں ترمیم پر عملدرآمد کمشن کے سربراہ سینیٹر رضا ربانی نے مسلم لیگ ( ق ) کو حکومت میں شامل کرنے پر سخت تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے احتجاجاً اپنا استعفیٰ صدر زرداری کو پیش کر دیا ہے۔ حکومتی ذرائع کے مطابق سینیٹر رضا ربانی نے پیر کو ظہرانے پر صدر مملکت سے ایک گھنٹے سے زائد دیر تک ملاقات کی جس میں انہوں نے کھل کر اپنے تحفظات سے صدر کو آگاہ کیا اور کہا کہ پارٹی کی اکثریت ( ق ) لیگ سے اتحاد کی مخالف ہے اور پارٹی کو اس سے شدید نقصان ہو گا۔ اس موقع پر صدر مملکت نے کہا کہ ن لیگ انہیں سیاسی طور پر تنہا کرنے کی کوشش کر رہی تھی اور ایسے میں ان کے پاس ( ق ) لیگ کو اپنے ساتھ ملانے کے سوا کوئی اور چارہ نہیں تھا۔ صدر نے اس موقع پر وزیراعظم گیلانی سے بھی بات کی جس پر وزیراعظم نے صدر سے درخواست کی ان کا استعفیٰ منظور نہ کیا جائے اور وہ اپنے دورہ فرانس سے وطن واپسی پر سینیٹر رضا ربانی کے تحفظات دور کریں گے۔ صدر نے استعفیٰ مسترد کر کے رضا ربانی کو کام جاری رکھنے کی ہدایت کی ہے۔
رضا ربانی