امریکی قومی سلامتی کے مشیر جان برینن نے کہا ہے کہ ایبٹ آباد آپریشن میں ماری جانے والی خاتون اسامہ کی بیوی تھی اور نہ اسامہ نے اسے انسانی ڈھال کے طور پر استعمال کیا۔

03 مئی 2011 (23:52)
امریکی قومی سلامتی کے مشیر جان برینن نے کہا ہے کہ ایبٹ آباد آپریشن میں ماری جانے والی خاتون اسامہ کی بیوی تھی اور نہ اسامہ نے اسے انسانی ڈھال کے طور پر استعمال کیا۔
وائٹ ہاؤس میں پر یس بریفننگ کے دوران جان برینن نے بتایا کہ ایبٹ آباد میں آپریشن کے دوران اسامہ کو دوگولیاں ماری گئیں جس میں سے ایک اس کے سر اور دوسری سینے میں لگی۔ گولیاں لگنے کے باوجود بن لادن کی لاش قابل شناخت تھی ۔ انہوں نے واضح کیا کہ اسامہ نے جوابی فائرنگ کی اورنہ ہی آپریشن کے دوران بن لادن کی بیوی جاں بحق ہوئیں تاہم وہ زخمی ہیں۔ جان برینن کا کہنا تھا کہ امریکہ نے فی الحال اسامہ کی لاش کی تصاویرجاری کرنے کا فیصلہ نہیں کیا، جبکہ اوباما کوگزشتہ برس ستمبر میں ہی اسامہ کی کمپاؤنڈ میں موجودگی کے اطلاع دے دی گئی تھی ۔ دوسری طرف ایک امریکی ٹی وی نے دعوٰی کیا ہے کہ القاعدہ کے رہنما اسامہ بن لادن کے خلاف کئے گئے آپریشن کا خفیہ کوڈ \\\"جیرونیمو\\\" تھا، ایبٹ آباد آپریشن کی پہلی اطلاع صدراوباما کواس وقت دی گئی جب اس کا آغازکیا گیا، وائٹ ہاؤس کوملنے والے پہلے خفیہ پیغام میں لفظ سیلز تحریر تھا جس کے معنی ہیں جس شخص کی تلاش تھی وہ مل گیا ہے۔ امریکی ٹی وی کا کہنا ہے کہ چالیس منٹ کی اس اعصاب شکن زمینی کارروائی میں دو درجن کمانڈوزاور چارہیلے کاپٹروں نے حصہ لیا۔