دفتر خارجہ کی ترجمان تہمینہ جنجوعہ نے کہا ہے کہ ایبٹ آباد میں جس اندازسےآپریشن کیا گیا پاکستان کو اس پر تشویش ہے، امریکہ کے ایسے اقدامات سے عالمی امن کو خطرات لاحق ہوسکتے ہیں۔

03 مئی 2011 (23:13)
دفتر خارجہ کی ترجمان تہمینہ جنجوعہ نے کہا ہے کہ ایبٹ آباد میں جس اندازسےآپریشن کیا گیا پاکستان کو اس پر تشویش ہے، امریکہ کے ایسے اقدامات سے عالمی امن کو خطرات لاحق ہوسکتے ہیں۔
اسلام آباد سے جاری بیان میں ترجمان دفتر خارجہ تہمینہ جنجوعہ نے کہا کہ ایبٹ آباد پر دوہزارتین سے حساس اداروں کی نظر تھی جبکہ دو ہزارنو سے اب تک آئی ایس آئی اور سی آئی اے کے درمیان معلومات کا تبادلہ ہوتا رہا، سی آئی اے ہماری معلومات کے ذریعے ہی اسامہ تک پہنچی، آئی ایس آئی نے القاعدہ کا ہائی ویلیو ٹارگٹ بھی اسی علاقے سے گرفتارکیا، ترجمان دفترخارجہ کا کہنا تھا کہ اسامہ کی موت دہشت گردی کے خاتمے کیلئے اہم پیشرفت ہے تاہم ایبٹ آباد آپریشن کا پاکستان کی فوجی اور سیاسی قیادت کوکوئی علم نہیں تھا، انہوں نے واضح کیا کہ پاکستان نےاسامہ کو قانون کی گرفت میں لانے کیلئے سنجیدہ کوششیں کیں تاہم اسے زندہ نہیں پکڑا جا سکا۔

آئین سے زیادتی

چلو ایک دن آئین سے سنگین زیادتی کے ملزم کو بھی چار بار نہیں تو ایک بار سزائے ...