اسامہ بن لادن کے خلاف آپریشن کے حوالے سے اوباما کی قومی سلامتی کی کمیٹی میں شدید اختلاف تھا۔

03 مئی 2011 (15:13)
اسامہ بن لادن کے خلاف آپریشن کے حوالے سے اوباما کی قومی سلامتی کی کمیٹی میں شدید اختلاف تھا۔
برطانوی خبررساں ایجنسی کے مطابق گزشتہ ہفتے صدر اوباما نے اعلیٰ سطح کے اجلاس کی صدارت کی جس میں القاعدہ کے سربراہ سے نمٹنے کے لیے تین تجاویز زیر غور آئیں۔ وائٹ ہاؤس میں ہونے والے اس اجلاس میں ایبٹ آباد میں کارروائی کے تمام پہلوؤں پر غور کیا گیا۔ قومی سلامتی کی ٹیم کے بعض ارکان کا خیال تھا کہ جدید ترین یو ایس نیوی سیسیلز کے ذریعے آپریشن کیا جائے۔ میزائل حملے کیے جائیں یا کمپاؤنڈ میں موجود شخص کی مکمل شناخت یقینی بنائی جائے۔ تین گھنٹے بعد بھی امریکی صدر کی مشاورتی ٹیم کسی نتیجے پر نہ پہنچ سکی۔ جس کے بعد امریکی صدرنے حتمی فیصلے کے لیے مہلت مانگی اور جمعے کی صبح امریکی سپیشل فورسز کے آپریشن کی منظوری دی۔ ایجنسی نے دعویٰ کیا ہے کہ آپریشن ختم ہونے تک کسی کو علم نہیں تھا کہ کمپاؤنڈ میں اسامہ بن لادن موجود ہے۔