پاکستان ،افغانستان اورامریکہ کے مابین سہ فریقی مذاکرات آج اسلام آباد میں شروع ہورہے ہیں ۔

03 مئی 2011 (12:00)
مذاکرات میں تینوں ممالک کے نمائندے شرکت کررہے ہیں۔ امریکہ کی جانب سے پاکستان اور افغانستان کیلئےخصوصی نمائندے مارک گراس مین جبکہ افغانستان کی نمائندگی نائب وزیرخارجہ کر رہے ہیں، پاکستان کی طرف سے سیکرٹری خارجہ مذاکرات میں شرکت کریں گے۔ واضح رہے کہ یہ مذاکرات اس سے قبل دو بار ملتوی ہوچکے ہیں ۔ پہلی بار یہ مذاکرات فروری میں ہونا تھے تاہم سابق وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کے حلف سے انکارکے بعد مذاکرات ملتوی ہوئے دوسری دفعہ یہ مذاکرات مارچ میں برسلز میں شیڈول تھے تاہم ریمنڈ ڈیوس کی رہائی اور دتہ خیل میں ڈرون حملے کے بعد پاکستان نے احتجاجاً ان میں شرکت سے انکارکردیا تھا۔ سہ فریقی مذاکرات میں دہشتگردی کے خلاف جنگ میں کارروائیوں کو مؤثر بنانے، تینوں ممالک کے درمیان رابطے کو فروغ دینے ،پاک افغان ٹرانزٹ ٹرید معاہدے میں پرعمل درآمد اور افغانستان میں مفاہمت کے عمل پرغورکیا جائے گا جبکہ اسامہ بن لادن کی موت کے بعد افغانستان کی نئی صورتحال کے حوالے سے بھی نئی حکمت عملی تیار کی جائے گی۔ اس موقع پر پاکستان ، افغانستان اور امریکہ کے درمیان دو طرفہ امور پر تبادلہ خیال بھی کیا جائے گا ۔