کشمیر پالیسی نہیں بدلی‘ مذاکرات کو مشروط کرنا بھارتی ناانصافی ہے : شاہ محمود قریشی

03 مارچ 2010
اسلام آباد (ریڈیو نیوز + آن لائن) وزےر خارجہ شاہ محمود قرےشی نے کہا ہے کہ کشمیر پالیسی بدلی نہ ملکی مفاد دا¶ پر لگا سکتے ہیں۔ جامع مذاکرات کی بحالی اور کشمےر سمےت تمام تنازعات کے حل کے حوالے سے گےند اب بھارت کے کورٹ مےں ہے، بھارت نے اےک بار پھر مذاکرات کو دہشت گردی کے خلاف کارروائی سے مشروط کر دےا ہے جو سراسر ناانصافی ہے، بھارت جامع مذاکرات کی مےز پر اسی جگہ واپس آئے جہاں سے ےہ سلسلہ ٹوٹا تھا، کشمےر کمےٹی کو پاکستان بھارت کے مابےن سےکرٹرےوں کی سطح کی بات چےت کے حوالے سے برےفنگ کے دوران وزےر خارجہ نے کشمےر کے حوالے سے ہونے والی پےش رفت کے حوالے سے بھی ارکان کو آگاہ کےا۔ ذرائع کے مطابق وزےر خارجہ نے کہا کہ دہلی مےں ہونے والی بات چےت مےں کشمےر جےسا اہم مسئلہ بھی شامل تھا، انہوں نے کہا کہ ہم بھارت کی جانب سے ممبئی واقعات کے حوالے سے بھجوائے جانےو الے مزید شواہد کا جائزہ لے رہے ہےں، جامع مذاکرات کو مشروط کرنا ناانصافی ہے ہم دہشت گردی کے خلاف پہلے ہی بہت کچھ کر چکے ہےں‘ انہوں نے کہا کہ بھارت کے ساتھ پانی کا معاملہ بھی اٹھاےا تھا جس پر بھارت نے اس مسئلہ کے حل مےں سنجےدگی کا اظہار کےا تھا۔