وزن کم کرنے کے بے حد آسان اور سادہ طریقے

03 جون 2013

ماہرین نے وزن کو کم کرنے اور اسے کنٹرول کرنے کےلئے بے حد آسان اور سادہ طریقے تجویز کئے ہیں جنہیں اپنا کر آپ بھی اپنا وزن کم کر سکتی ہیں جب بھی کھائیں سلاد وغیرہ کا خصوصی اہتمام کریں تاکہ روٹی اور چاول کی جگہ آپ ان سے پیٹ بھر سکیں۔ایسی خوراک کھائیں جس میں کم کیلوریز ہوں۔صرف اس وقت کھائیں جب آپ کو اس کی ضرورت ہو۔غذا کو جسم کا ایندھن خیال کریں ہمیشہ بیٹھ کر کھائیں چلتے پھرتے نہ کھائیں۔کھانے کے دوران مطالعہ نہ کریںاور نہ ٹی وی دیکھیں،باہر جائیں تو آئسکریم یا مٹھائی نہ کھائیں۔یہ یاد رکھیں آپ نے کیا اور کب کھایا تھا ،بغیر ملائی کا دودھ استعمال کریں۔چائے کافی کے وقفے کو کھانے کا وقفہ بنائیں۔بسکٹ،کیک،مٹھائیاں چھوڑ دیں۔یہ چیزیں وزن میں اضافہ کرتی ہیں۔گھر میں پھل اور ایسی چیزوں کا اسٹاک رکھیں جن میں چکنائی،نمک اور شکر کم ہو۔ہمیشہ بغیر چربی کا گوشت کھائیںاورچھوٹی پلیٹ میں کھانا کھائیں۔دن میں دو سے زیادہ بار نہ کھائیں ۔ایک وقت کا کھانا صرف ایک بار کھائیں مشروب میں پانی کی مقدار بڑھائیں کھانے سے پہلے پانی ضرور پیئیں۔ صبح سویرے نیم گرم پانی کے پانچ چھوٹے گلاس پانی پی لیں پھر آپ آٹھ یا نو بجے ناشتا کریں۔ناشتے میں براﺅن بریڈ،کوٹیج چیز سیب اور ”لو فیٹ ملک“ لیں۔پھر دو گھنٹے کے بعد دو کھیرایا سیب کھا لیں۔اس کے دو گھنٹے کے بعد سکمڈ دہی کھا لیں اس طریقے سے رات تک دو دو گھنٹے کے بعد کچھ نہ کچھ کھائیں۔روٹی چاول بالکل نہ کھائیں۔ساتھ ہی پیٹ اندر کرکے تھوڑی چہل قدمی بھی کریں۔گھر میں سیڑھیاں ہیں تو ان پر چڑھیں اور اتریں۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔وزن کم کرنے کےلئے کونسے پھل مفید ہیںپھلوں کے بکثرت استعمال سے آپ مجموعی طور پر صحت مند ہونے کے ساتھ ساتھ کافی حد تک اپنا وزن بھی کم کر سکتے ہیں کیونکہ پھلوں اور سبزیوں میں کیلوریز کم ہوتی ہیں جبکہ وٹامنز اور دیگر غذائی اجزاءبہت زیادہ ہوتے ہیں۔جن کے استعمال سے جسم میں باقاعدہ نشوونما ہوتی ہے۔علاوہ ازیں پھلوں میں چکنائی بالکل نہیں ہوتی جس سے دل کے امراض پیدا ہونے کا خدشہ نہیں ہوتا۔پھلوں میں فائٹو کیمیکلز بھی ہوتے ہیں جو بلڈ پریشر کو حد سے زیادہ بڑھنے سے روکتے ہیں کینسر،ذیابطیس اور موٹاپے سے نجات دلاتے ہیں۔موٹاپے اور زیادہ وزن کا شکار ہر انسان خواہش رکھتا ہے کہ وہ سمارٹ اور دبلا پتلا نظر آئے اس کےلئے ہزاروں افراد سلمنگ سینٹر تکلیف دہ ورزشیں اودریات استعمال کرتے ہیں ۔علاوہ ازیں اس طرح کے دیگر حربے استعمال کرتے ہیں جن کے فوائد کم اور نقصان زیادہ ہوتا ہے جبکہ پھلوں کے استعمال سے بہتر طور پر وزن کم کیا جا سکتا ہے۔پھلوںمیں کیلوریز نہایت کم ہوتی ہیںاور ان سے وزن میں اضافہ نہیں ہوتا۔پھلوں میں ریشہ دار اجزاءہوتے ہیں جو تندرست جسم کےلئے از حد ضروری ہوتے ہیں۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔پیاز کو محفوظ کرنے کے طریقےپیاز کو زیادہ عرصے تک محفوظ کرنے کےلئے یہ طریقہ کافی کارآمد ہے کہ جب تک آپ کو کچن میں پیاز کے استعمال کی ضرورت نہ پڑے تب تک آپ انہیں جالی کے بڑے سے تھیلے میں ڈال کر کسی الگ کمرے میں ٹھنڈی اور خشک جگہ پر رکھ دیں٭پیازوں کو دیر تک تازہ رکھنے کےلئے انہیں عموماً فریج میں رکھا جاتا ہے چونکہ ان کی بو بہت تیز اور چبھنے والی ہوتی ہے جو فریج میں پڑی دوسری کھانے کی اشیاءکےلئے ٹھیک نہیں ہوتی۔لہذا پیازوں کو فریج میں محفوظ کرنے سے پہلے انہیں براﺅن پیپر میں ڈالیں اور پھرفریج کے نچلے حصے میں کھانے کی دوسری اشیاءسے دور رکھیں٭جب آپ پیاز کو بازار سے خرید کر لائیں تو انہیں محفوظ کرتے وقت دھو کر صاف کریں بلکہ انہیں بنا دھوتے ہی ریفریجریٹر میں براﺅن پیپر کے تھیلے میں ڈال کر رکھیں۔پیاز کو محفوظ کرنے کا ایک اور مفید طریقہ یہ ہے کہ پیازوں کو لچھے دار کاٹ لیں اور اوون میں کوکی شیٹ رکھ کر اس پر پیازوں کو رکھ کر براﺅن کر لیں اور پھر sealed containersمیں ڈال کر نمی سے دور ٹھنڈی خشک جگہ پر رکھیں۔