مسئلہ کشمیر حل کئے بغیر بھارت سے نتیجہ خیز مذاکرات نہیں ہوسکتے: عبدالرشید ترابی

03 جون 2013

لاہور (نیوز رپورٹر) بھارتی حکومت کی طرف سے کشمیریوں کے حقوق کی پامالی جاری ہے۔ اب تک ہزاروں کی تعداد میں کشمیری اپنی جانیں صرف اور صرف آزادی اور بھارت کے غاصبانہ قبضے کے خلاف دے چکے ہیں۔ بھارت سے تب تک نتیجہ خیز مذاکرات نہیں ہوسکتے جب تک بھارت اپنا قبضہ کشمیر سے چھوڑ نہیں دیتا اور استصواب رائے کے ذریعے کشمیریوں کو اپنا حق استعمال نہیں کرنے دیتا۔ ان خیالات کا اظہار پیر محمد عتیق الرحمان، عبدالرشید ترابی اور صادق جرا ل نے نوائے وقت سے کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ بھارت کے ساتھ دوستی کی پینگیں بڑھانے کا مطلب کشمیریوں کے خون سے روگردانی کے مترادف ہوگا۔ بھارت ایک طرف پاکستان کا پانی بند کرکے قحط زدہ ملک بنانے کے در پے ہے۔ دوسری طرف بھارت اپنی فوج میں مزید اضافہ کرکے کشمیر میں بھجوا رہا ہے۔ کشمیریوں کی آزادی ایک تحریک کا نام ہے۔ ایشیا میں امن و سکون اس وقت تک نہیں ہوسکتا جب تک کشمیر کا مسئلہ حل نہیں ہوجاتا۔ انہوں نے کہا کہ نئی پاکستانی حکومت کو ایسی پالیسی اختیار کرنا ہوگی کہ بھارت خود ہی مذاکرات کے ٹیبل پر آجائے، پاکستانی حکومت کو خود بھارت کے آگے گھٹنے نہیں ٹیکنے چاہئیں۔