بھارت :پٹھانکوٹ ایئربیس ایک بار پھر فائرنگ اور دھماکوں سے گونج اٹھی، ہلاکتوں کی تعداد 11 سے تجاوز کر گئی

03 جنوری 2016 (18:29)

بھارتی میڈیا کے مطابق پٹھان کوٹ ائیر بیس اتوار کے روز بھی دھماکوں اور فائرنگ سے گونجتی رہی، ایئر بیس پر سرچنگ کے دوران دھماکے اور فائرنگ کے نتیجے میں پھر تھرتھلی مچ گئی، فوج کے ساتھ ساتھ کمانڈوز کو بھی طلب کرنا پڑا۔
ائیربیس میں دو دہشت گردوں کی موجودگی کی اطلاع پر علاقے کو گھیرے میں لے لیا گیا، بھارتی فوج اور دہشتگردوں میں فائرنگ کا تبادلہ کافی دیر جاری رہا،سرچنگ آپریشن کے دوران گرینیڈ بم دھماکے میں لیفٹینٹ کرنل ای کے نرنجان سمیت تین اہلکار زخمی ہوگئے، تاہم لیفٹیننٹ کرنل نرنجان زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے ہلاک ہو گیا۔
کئی گھٹنوں تک جاری رہنے والے آپریشن میں ہلاکتوں کی تعداد گیارہ سے تجاوز کر گئی، جبکہ دو درجن کے قریب فوجی زخمی بھی ہوئے، ائیربیس حملوں کے بعد ہیلی کاپٹروں اور ڈرونز کے ذریعے ائیربیس کی نگرانی کی جاتی رہی، جبکہ ملک بھر میں سیکیورٹی ہائی الرٹ کردی گئی-
دوسری طرف اتوار کی صبح نئی دہلی ریلوے سٹیشنز پر بم کی اطلاع نے بھارتی فورسز کی دوڑیں لگوا دیں۔ریلوے اسٹیشن فوری طور پر خالی کرالی لیا گیا، غازی آباد اسٹیشن پر لکھنو شتابدی ایکسپریس اور کانپور جانے والی ٹرینوں کو تلاشی کے بعد روانہ کیا گیا،کئی ٹرینیں تاخیر کا شکار ہوئیں، مسافروں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔

دہشتگردوں کے خلاف جاری فوجی آُپریشن آخری مراحل میں داخل ہوچکا ہے: بھارتی سیکرٹری داخلہ

بھارتی سیکرٹری داخلہ راجیو مہرشی اور ایئر مارشل انیل کھوسلہ نے پٹھانکوٹ ائربیس کی موجودہ صورتحال پر میڈیا کو بریفنگ دی، اس موقع پر سیکرٹری داخلہ راجیو مہرشی نے بتایا کہ ایئربیس میں چھپے دو دہشتگردوں نے آج صبح کارروائی کرنا چاہی جنہیں گھیرے میں لے کر آُپریشن پھر سے شروع کیا گیا، ان کا کہنا تھا کہ دہشتگردوں کو ایئربیس کے مخصوص حصے تک محدود کردیا گیا ہے، امید ہے آپریشن آج رات تک اختتام پذیر ہوجائے گا، راجیو مہرشی کے مطابق بھارتی فوج کی بروقت کارروائی نے دہشتگردوں کو ایئربیس کےاثاثوں تک نہیں پہنچنے دیا،سیکرٹری داخلہ نے دہشتگرد حملے میں چھے فوجیوں کی ہلاکت اور آٹھ کے زخمی ہونے کی تصدیق بھی کی، اس موقع پر ایئر مارشل انیل کھوسلہ نے بتایا کہ جوابی کارروائی کے دوران چار دہشتگرد مارے جاچکے ہیںجبکہ دیگر دو کی ہلاکت کی تصدیق انکی لاشوں کے ملنے کے بعد ہی کی جائے گی-

بھارتی فورسز دوسرے روز بھی ایئر بیس کلیئر نہیں کرا سکیں, حسب روایت بھارتی میڈیا نے حملہ آوروں کو پاکستانی بنا دیا

پاکستان حکومت کی جانب سے  پٹھانکوٹ حملے کی شدید الفاظ میں مذمت اور بھارتی حکومت کے مثبت رد عمل کے باوجود بھارتی میڈیا مسلسل ایک ہی گردان کر رہا ہے کہ پٹھانکوٹ حملہ پاکستان نے کیا ، ہوا میں تیر چلاتے ہوئے بے لگام انڈین ٹی وی چینلز نے حملے کے تیس گھنٹے بعد ایئر بیس میں دو دہشت گردوں کی موجودگی کی اطلاعات دی ،دعویٰ کیا جارہا ہے کہ دہشت گردوں کو سیکیورٹی فورسز نے گھیر لیا ہے -
ادھر پاکستان دشمنی کی راگنی الاپنے والا بھارتی میڈیا ابھی تک چند سوالوں کے جواب نہیں دے سکا؟ آخر بھارتی سیکیورٹی فورسز تیس گھنٹے سے زیادہ گزرنے کے با وجود بھی پٹھانکوٹ ایئر بیس کلیئر کیوں نہیں کرا سکیں ؟جو آپریشن گزشتہ روز ختم کر دیا گیا تھا اسے آج پھر کیوں شروع گیا ؟ حملے کی رات ایئر بیس اور اس سے ملحقہ علاقے میں مشکوک سرگرمیوں میں ملوث لوگ کون تھے ؟ بھارتی چینلز پر پٹھا ن کوٹ ڈرامے کی حقیقت بتانے والے عینی شاہد کی براہ راست کال کیوں منقطع کی گئی-
پٹھانکوٹ ائیر بیس  حملہ سےپاک بھارت تعلقات کی بحالی کاعمل ختم نہیں کیاجاسکتا: بھارتیہ جنتاپارٹی 

بھارتی اخبارکےمطابق پٹھانکوٹ ائربیس پرحملےسےمتعلق بھارتیہ جنتاپارٹی کے سیکریٹری شری کانت شرما نے کہا کہ بھارت دہشتگردی کی ایسی کارروائیوں کاموثرجواب دیناجانتاہے،ساتھ ہی یہ بھی واضح کیا کہ ایک حملےسےپاک بھارت تعلقات کی بحالی کاعمل ختم نہیں کیاجاسکتا۔بھارت کےوزیرماحولیات پرکاش جوادکرنےبھی واضح کیا کہ پٹھان کوٹ حملےسےڈائیلاگ کاعمل تباہ نہیں ہوسکتا،پڑوسی نہیں بدلےجاسکتے،مذاکرات کاعمل جاری رہناچاہیے۔پرکاش جوادکر کاکہناتھاکہ مذاکرات کامرکزی نکتہ دہشتگردی ہوناچاہیےاوریہی بھارت کررہاہے۔بھارتی پنجاب کے شہر پٹھان کوٹ میں بھارتی فضائی اڈے پر حملے میں 5حملہ آور مارے گئے تھے۔