مذہبی اور سیاسی قائدین داعش سے توجہ ہٹانے والے بیانات سے گریز کریں

03 جنوری 2016
مذہبی اور سیاسی قائدین داعش سے توجہ ہٹانے والے بیانات سے گریز کریں

جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق نے کہا ہے کہ کرپشن داعش سے بھی بڑا خطرہ ہے۔
اس میں کوئی دورائے نہیں کہ کرپشن بھی ایک ناسور ہے جس نے معاشرے کو کھوکھلا کر دیا ہے۔ اسکے خلاف سخت ایکشن لینا چاہیے۔ لیکن کسی بھی معاشرے میں ایسا نہیں ہوتا کہ سبھی لوگ ہاتھ دھو کر کسی ایک چیز کے پیچھے پڑھ جائیں اور باقی برائیوں کی طرف سے نظریں بند کرلیں۔ ہمیں ہر محاذ پر لڑنا اور ہر گند صاف کرنا ہے۔ سراج الحق کی جماعت تو بہتر انداز میںاور سب سے بڑھ کر داعش کیخلاف حکومت کی مدد کر سکتی ہے۔ انہیں کرپشن کی باتیں کر کے داعش سے حکومت کی توجہ ہٹانی نہیں چاہیے۔ حکومت تو پہلے ہی آنکھیں بند کر کے بیٹھی ہوئی ہے۔ اگر اسے سیاسی جماعتوں کی طرف سے بھی کچھ سپورٹ مل جائیگی تو وہ داعش کی طرف توجہ دینا چھوڑ دیگی۔ سراج الحق کرپشن کو داعش سے بڑا خطرہ مت قرار دیں بلکہ حکومت کو داعش کےخلاف ایکشن لینے کےلئے تیار کریں۔ ان کا بیان بادی النظر میں داعش کے معاملات سے حکومت کی توجہ ہٹانے کے مترادف ہے۔ حالانکہ داعش کے ہاتھوں خواتین کی بیحرمتی، مقدس مقامات کی پامالی اور انسانیت کی تذلیل کے واقعات کسی سے ڈھکے چھپے نہیں۔ جماعت اسلامی کو دیگر مذہبی جماعتوں سے چند قدم آگے بڑھ کر اس ناسور کے خاتمے میں کردار ادا کرنا چاہیے۔