افغان طالبان گروپ جنگ بندیوں کے تبادلے پرمتفق

03 جنوری 2016

کابل (رائٹر+ ایجنسیاں) افغان طالبان کے متحارب گروہ جنگ بندی اور قیدیوں کے تبادلے پر متفق ہو گئے ہیں۔ رائٹر کے مطابق مخالف گروپ کے سربراہ نے ملا اختر منصور کے نائب سے ملاقات کی ہے تاکہ مزید خون نہ بہایا جائے اور ساری توجہ مشترکہ دشمن سے لڑنے پر رکھی جائے۔ خبرایجنسی نے دعویٰ کیا ہے کہ افغان طالبان کے مختلف گروپوں کے نمائندوں کا اجلاس افغانستان میں نامعلوم مقام پر ہوا جس میں اس بات پر اتفاق کیا گیا کہ مخالف گروہ جنگ بندی کرکے قیدیوں کا تبادلہ کریں گے۔ مخالف گروپ کے سربراہ ملا محمد رسول اخوند نے نامعلوم مقام پر ملا اختر منصور کے نائب سے ملاقات کی۔ سکیورٹی وجوہات کی وجہ سے ان کی ملا اختر سے ملاقات نہیں کرائی گئی۔ ملا اختر کے نائب کا کہنا تھا افغان طالبان کے امیر سکیورٹی خدشات کی وجہ سے اب کسی سے ملاقات نہیں کریں گے۔ خبر ایجنسی کے مطابق ملا اختر منصور کی امارت کے معاملے پر طالبان کے مختلف گروہوں میں اختلافات پائے جاتے ہیں۔ سکیورٹی فورسز نے صوبہ ہلمند میں طالبان کی ایک جیل پر چھاپہ مار کر وہاں قید 59 مغویوں کو رہا کرا لیا گیا ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق حکومتی بیان میں کہا گیا ہے کہ رہا کرائے گئے افراد میں فوجی، پولیس اہلکار اور عام شہری شامل تھے۔ ہلمند کے متعدد علاقوں پر طالبان قابض ہیں اور اب حکومت نے عسکریت پسندوں کی سرکوبی کیلئے وہاں تعینات فورسز کی تعداد میں نمایاں اضافہ کر دیا ہے۔ افغان وزارت دفاع کے مطابق ہلمند سے رہا ہونے والوں میں 37 افغان فوجی، 7 پولیس اہلکار اور 15 شہری شامل ہیں۔ پاکستان اٖفغان سرحد پر واقع علاقہ لامن میں امریکی جاسوس طیارے کے حملے میںکالعدم تحریک طالبان سے تعلق رکھنے والے دوطالبان ہلاک ہوگئے۔ سرکاری ذرائع کے مطابق سرحد کے دوسری جانب تحصیل برمل کے علاقہ لامن گائوں چخڑ میں امریکی جاسوس طیارے نے پیدل چلنے والے کالعدم تحریک طالبان کے دوکمانڈروں پرمیزائل فائر کیا جس کے نتیجے میں دونوں موقع پر ہلاک ہوئے۔ ہلاک ہونے والوں میں سینئرکمانڈر عبدالجلیل محسود المعروف مولانا زاہد شامل ہے۔ واضح رہے کہ مولانا عبدالجلیل محسود کاتعلق تحصیل سروکئی کے علاقہ اوسپاس سے بتائی جاتی ہے۔ افغانستان کے صوبہ ہرات میں خودکش حملے کی کوشش کے دوران دھماکہ سے 4 خودکش بمبار ہلاک ہو گئے۔ طالبان نے قندوز کے 2 اضلاع پر پوزیشن مزید مستحکم کر لی ہے۔ ادھر صوبہ قندوز میں طالبان نے ضلع دشت ارچی اور امام صاحب میں طالبان نے اپنی پوزیشنوں کو مزید مستحکم کر لیا ہے۔