ویژن سے محروم لیڈروں نے پرامن پاکستان کو دہشت گردی کی نرسری بنا دیا: طاہر القادری

03 جنوری 2016

لاہور (لیڈی رپورٹر) عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہر القادری نے منہاج القرآن ویمن لیگ کی طرف سے مقامی ہوٹل میں منعقدہ ’’پیس گالا‘‘ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آپریشن ضرب عضب کو ناکام بنانے کیلئے دنیا کی سب سے بڑی دہشت گرد تنظیم داعش پاکستان میں اپنا نیٹ ورک پھیلارہی ہے، اسکا ہدف آپریشن ضرب عضب ہے، داعشانہ طرز کی سرگرمیاں رکھنے والے حکمرانوں کی سرپرستی اور معاونت اسے حاصل ہے، سانحہ ماڈل ٹائون داعش کی طرز کی دہشت گردی تھی، دہشت گردوں کے خلاف لڑنا فوج کے ساتھ ساتھ پاکستان کے ہرفرد کی ذمہ داری ہے، دہشت گردی اور انتہاپسندی کے خاتمہ اور فروغ علم و امن کیلئے خواتین کا ماضی کی نسبت آج کہیں زیادہ اہم کردار ہے، اسلام نے خواتین کو مردوں سے بڑھ کر عزت اور مقام دیا۔ پیس گالا کے اختتام پر اسلام آباد سے آئی ہوئی ماہرتعلیم عذرا بیگم اور لبنیٰ نسیم نے ویمن لیگ میں شرکت کا اعلان کیا۔ ڈاکٹر حسن محی الدین اور خرم نواز گنڈاپور بھی اس موقع پر موجود تھے۔ ڈاکٹر طاہرالقادری نے کہا کہ پاکستان میں 30 سال سے دہشت گردی کا نیٹ ورک کام کررہا ہے، مقامی سہولت کاروں کے بغیر بیرونی دہشت گرد اور تنظیمیں یہاں کارروائیاں نہیں کر سکتیں۔ تعلیم سے محروم رکھنا ،انصاف نہ دینا، روزگار نہ دینا بالواسطہ طور پر دہشت گردی کو فروغ دینے کے اقدامات ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں ویژن سے محروم لیڈروں نے پرامن ملک کو دہشت گردی کی نرسری میں تبدیل کر دیا، کرپٹ اور معاشی دہشت گرد حکمران صرف اور صرف اپنے آپ کو اور اپنی نسلوں کو پال رہے ہیں۔