پاکستان سٹیل کے سابق چیئرمین اور دیگر کیخلاف نیب کی تحقیقات مکمل، مقدمات درج

03 جنوری 2016

اسلام آباد (آن لائن) نیب نے سا ت ارب روپے سے زائد کی مالی بے ضابطگی، اختیارات کے غلط استعمال اور قواعد و ضوابط کی خلاف ورزیوں پر پاکستان سٹیل مل کے سابق چیئرمین معین آفتاب شیخ اور اعلیٰ افسروں سمیت دیگر افراد کیخلاف تحقیقات مکمل کرکے مقدمات درج کرلئے ہیں اور انہیں نیب عدالت میںبھیج دیا ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق نیب نے معین آفتاب شیخ، سابق کمرشل ڈائریکڑ یاسمین اصغر، کیپٹن رشید ابڑو اور نوبل ریسورسز کے نمائندوں کیخلاف بغیر ٹینڈر کے 53 کروڑ سے زائد مالیت کا 50 ہزار میڑک ٹن کوئلہ مہنگے داموں، آسٹریلیا اور ہانگ کانگ سے منگوانے کیخلاف ضمنی ریفرنس احتساب عدالت کراچی کو بھیج دیا ہے۔ گزشتہ دور حکومت میں پونے 5 ارب سے زائد کی کرپشن کے 5 کیسز کی تحقیقات حتمی مراحل میں ہے، نیب کی جانب سے بھیجے گئے دوسرے ریفرنس میں بھی سابق چیئرمین سٹیل، سابق کمرشل ڈائریکڑ ثمن اصغر، کیپٹن رشید ابڑو اور نوبل ریسورسز کے نمائندو ں کیخلاف رولز کی خلاف ورزی کرکے 98 کروڑ مالیت کا کوئلہ مہنگے داموں خریدنے کے الزام ہے۔ 4 ارب 19 کروڑ سے زائد کا تیسرا ریفرنس بھی معین آفتاب شیخ اور سابق کمرشل ڈائریکڑ ثمن اصغر کیخلاف ہے۔ دوسری جانب چوتھے ریفرنس میں یہ انکشاف کیا گیا ہے کہ پاکستان سٹیل مل کے سابق چیئرمین نے دیگر افسروں کیساتھ ملکر عباس گروپ کو عالمی مارکیٹ سے کم ریٹ پر بلٹس فروخت کرکے ملکی خزانہ کو 43 کروڑ سے زائد کا نقصان پہنچایا ہے، سٹیل کی کنٹین کو من پسند افراد کو سستے داموں دے کر 8کروڑ کا نقصان پہنچایا جبکہ سابق ڈائریکڑ کمرشل ثمن اصغر نے دیگر حکام سے ملک کر من پسندکسٹمرز کو فری کریڈٹ سکیم کے تحت غیر قانونی ایکسٹینشن دیکر ادارے کو ایک کروڑ 36 لاکھ کا نقصان پہنچایا، لوکل وعالمی مارکیٹ میں بلٹس کی قیمتیں زیادہ ہونے کے باوجود سٹیل ملز حکام نے قیمت میں 35 فیصد کم کردی۔ 4 ارب 77 کروڑ کی کرپشن کے 5 کیسز کی تحقیقات حتمی مراحل میں ہے۔