پاکستان کا مطلب کیا ہے

03 جنوری 2016

مکرمی! پاکستان کا نظریہ پاکستان صرف قرآن و سنت ہے۔ قائداعظم نے ہر سوال کرنے والے کو ہمیشہ یہی جواب دیا کہ ہمارا نظریہ پاکستان قرآن و سنت ہے۔ جو کہ پندرہ سو برس سے قائم و دائم ہے۔ لبرل سیکولر سوشلزم کمیونزم وغیرہ کے نظام کے حامی وہ لوگ ہیں۔ جنہوں نے پاکستان کو بنتے نہیں دیکھا۔ جب تحریک پاکستان چل رہی تھی۔ تو یہ لوگ دنیا میں موجود ہی نہیں تھے۔ بلکہ پیدا بھی نہ ہوئے تھے۔ اسلئے انہیں پاکستان کی قدرو قیمت کا کیا احساس ہو سکتا ہے۔ اُنہیں اتنا علم تک نہیں کہ پاکستان کیوں معرض وجود میں آنا چاہتا تھا۔ اسکی کیا ضرورت تھی۔ اور آ ج یہی مخالفین اسی پاکستان میں باعزت اور پرسکون زندگی گزار رہے ہیں۔ یہ سب پاکستان کا صدقہ ہے۔ بھارت میں آجکل مسلمانوں اور دیگر اقلیتوں پر جو گزر رہی ہے۔ اسے ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے سوچیں پھر سب کچھ انکی سمجھ میں آجائیگا۔ پاکستان کسی نے پلیٹ میں سجا کر مسلمانان ہند کو نہیں دیا۔ بلکہ قائداعظم کی ولولہ انگیز قیادت اور کارکنان تحریک پاکستان کی انھتک جدوجہد و بے لوث اور مخلصانہ قربانی اور رب العزت کا فضل و کرم شامل حال ہے۔ اگر پاکستان میں قرآن وسنت کے مطابق نظام قائم ہو جائے تو پاکستان کا یہ حال نہ ہوتا۔ بلکہ پاکستان پوری دنیا کیلئے ایک خوشحال اور بے مثال مملکت اسلامیہ بن کو ابھرتا۔ (محمد خورشید انور بغدادی گولڈ میڈلسٹ تحریک و نظریہ پاکستان)