لاہور ہائیکورٹ نے بجلی کے بلوں میں نیلم جہلم سرچارج سمیت تین سرچارجز کی وصولی کے خلاف وفاقی حکومت سے5 اگست کو جواب طلب کر لیا

03 اگست 2015 (21:04)
لاہور ہائیکورٹ نے بجلی کے بلوں میں نیلم جہلم سرچارج سمیت تین سرچارجز کی وصولی کے خلاف وفاقی حکومت سے5 اگست کو جواب طلب کر لیا

لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس شاہد کریم نے کیس کی سماعت کی۔درخواست گزار نے کہا کہ نیپرا ایکٹ کے سیکشن اکتیس کا سب سیکشن پانچ آئین سے متصادم ہے۔نیپرا قانون ساز ادارہ ہونے کی حیثیت میں کسی قسم کے سرچارج کی وصولی کرنے کا کوئی اختیار نہیں رکھتا۔عدالتی حکم کے باوجود جون سے بجلی کے بلوں میں نیلم جہلم سرچارج سمیت تین اقسام کے سرچاج غیر قانونی طور پر عائد کر دئیے گئے ہیں.جس پر عدالت نے بجلی کے بلوں میں نیلم جہلم سرچارج سمیت تین سرچارجز کی وصولی کے خلاف دائر درخواست پر وفاقی حکومت,نیپرا اور وزارت پانی و بجلی کو نوٹس جاری کرتے ہوئے پانچ اگست جواب طلب کرلیا.