’انگریزی نہیں بول سکتے تو ملازمت بھی نہیں‘: برطانیہ کی وارننگ

03 اگست 2015

لندن (بی بی سی) برطانیہ میں حکومت نے کہا ہے کہ وہ افراد جو روانی سے انگریزی زبان نہیں بول سکتے انہیں ایسی ملازمتیں کرنے سے روکدیا جائیگا جہاں براہِ راست عوام سے پیش آنا پڑتا ہے۔ اس سال ستمبر سے نیشنل ہیلتھ سروس (این ایچ ایس) اور مقامی حکومتوں میں صرف ایسے افراد ہی نوکری کر سکیں گے جن کو انگریزی زبان بولنی آتی ہو گی۔ منیجروں سے کہا جائے گا کہ وہ دیکھیں کہ ملازمین ’موثر انداز میں لوگوں سے بات چیت کر سکتے ہیں یا نہیں۔‘ کابینہ کے وزیر میٹ ہینکاک کہنا تھا کہ اس سے امیگریشن کو کنٹرول کرنے میں مدد ملے گی۔ نئے قواعد کے تحت جو سرکاری امیگریشن پالیسی کا حصہ ہوں گے، سرکاری محکمے کا ہر وہ کارکن جسے اپنی ملازمت میں ’عوام سے بات کرنا ہوگی‘، اس کے لیے سکول کی سطح کی انگریزی زبان بولنا ضروری ہوگا۔