برطانیہ اور فرانس کی تارکین وطن کا بحران کے حل کی اپیل

03 اگست 2015

لندن (بی بی سی) برطانیہ اور فرانس نے یورپی یونین کے دوسرے ممالک سے کیلئے تارکینِ وطن کے بحران کی اصل وجوہات کو حل کرنے میں مدد کرنے کی اپیل کی ہے۔ برطانوی اخبار سنڈے ٹیلیگراف میں برطانوی وزیرِ داخلہ تھریسا مے اور ان کے فرانسیسی ہم منصب برنارڈ کیزے نووے نے ان حالات کو ’عالمی تارکین وطن‘ کا بحران کہا ہے۔ کیلے پر جمع پناہ گزین رات کو برطانیہ اور فرانس کیدرمیان واقع رود بار (چینل) کو پار کے برطانیہ پہنچنے کی کوششیں کرتے ہیں۔ برطانیہ اور فرانس دونوں نے صورتحال پر قابو پانے کا عہد کیا ہے۔ یہ اپیل فرانس اور برطانیہ کے درمیان سکیورٹی انتظامات میں اضافے کے معاہدے کے بعد مزید تفصیلات سامنے آنے کے بعد کی گئی ہے۔ یہ انتظامات فرانس کی جانب والے چینل ٹنل کے حصے کے لیے ہیں جن میں اضافی پرائیوٹ سکیورٹی گارڈز کی تعیناتی، نگرانی کے لیے مزید سی سی ٹی کیمرے نصب کرنا، فرانسیسی پولیس کی موجودگی میں اضافہ اور اضافی باڑھ لگانا وغیرہ شامل ہیں۔ برطانوی وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون اور فرانسیسی صدر فرانسوا اولاند نے فون پر ان اقدامات پر رضامندی ظاہر کی تھی۔ کیلے پناہ گزینوں کے لیے مقامی پولیس کے ساتھ 600 سے زائد فساد پر قابو پانے والے پولیس اہلکاروں کو تعینات کیا گیا ہے۔ برطانوی وزیر داخلہ تھریسا مے اور کیزے نیوے نے سنڈے ٹیلیگراف میں لکھا ’ان حالات کو صرف دو ممالک کے مسائل کے طور پر نہیں دیکھا جا سکتا۔