حکمرانوں کو دھرنے سازش لگتے ہیں تو تحقیقاتی کمشن کیوں نہیں بناتے: چوہدری سرور

03 اگست 2015

لاہور(خبر نگار) تحرےک انصاف کے صوبائی آرگنائزر چوہدری محمدسرورنے کہا ہے کہ تحر ےک انصاف پارلےمنٹ سے ڈی سےٹ ہوئی تو 2016 عام انتخابات کا سال ہو گا ‘اگر حکمران سمجھتے ہےں کہ احتجاجی دھر نے مےں انکے خلاف کوئی سازش ہوئی تواسکی تحقےقات کےلئے کمےشن کےوں نہےں بناتے ؟حکمرانوں اور انکے حوارےوں سے بلےک مےل ہونے کا سوال ہی پےدا نہےں ہو تا ہم سےاسی مخالفےن کی آنکھوں مےں آنکھےں ڈال کر بات کر ےں گے ‘مسلم لیگ(ن) او ر پےپلزپارٹی ”مال بناﺅ“ ”کر پشن بچاﺅ “اےجنڈے پر اےک ہو چکی ہےں ۔ انہوں نے کہا کہ تحر ےک انصاف ہی پاکستان کی واحد جماعت ہے جو ملک مےں مک مکاﺅ کی سےاست کرنےوالوں کو انصاف کے کٹہرے مےں لائےگی اور سوئس بنکوں اور لندن سے انکی لوٹی ہوئی دولت کو پاکستان مےں واپس لائےں گے ۔ انہوں نے کہا کہ حکو مت اور اپوزےشن کی بعض جماعتےں سمجھتی ہے کہ وہ ہمارے اراکےن کو ڈی سےٹ کروانے کی دھمکےاں دےکر بلےک مےل کر لےں گے تو ےہ انکی بھول ہو گی حکمرانوں اور انکے حوارےوں کو چاہےے کہ وہ ”ٹوپی ڈرامہ “بند کر ےں اور ملکی مسائل کے حل پر توجہ دےں ۔ اپوزےشن لےڈر مےاں محمودالر شےد نے کہا کہ (ن) لےگ سےاسی موت مر رہی ہے اور ہر روز عوام دشمن حکمرانوں کی پا لےساں قوم کےلئے عذاب کی شکل بن رہا ہے۔