اوباشوں نے بیوہ، 2 لڑکیوں اور لڑکے کو زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا

03 اگست 2015
اوباشوں نے بیوہ، 2 لڑکیوں اور لڑکے کو زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا

لاہور (نامہ نگاران) اوباشوں نے بیوہ، 2 لڑکیوں اور لڑکے کو زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔ قصور سے نامہ نگار کے مطابق پھول نگر کے نواحی کوٹ حاکم علی میں محمد لطیف کی بیوہ (ز) حسب معمول اپنے گھر میں موجود تھی اوباش شریف وغیرہ نے زبردستی گھر میں گھس کر اس سے زیادتی کی۔ پولیس تھانہ پھولنگر مصروف تفتیش ہے۔ اوکاڑہ سے نامہ نگار کے مطابق بنگلہ گوگیرہ کی رہائشی پروین بی بی کی جواں سالہ بیٹی (ش) کو چک نمبر 11|1-Rمیں ملزم عمران نے زبردستی زیادتی کا نشانہ بنایا۔ پولیس نے پروین بی بی کی درخواست پر مقدمہ درج کر لیا۔ دیپالپور سے نامہ نگار کے مطابق گائوں صوبہ رام کا نو عمر لڑکا علی اسلم اپنے گھر کے سامنے کھڑا تھا اوباش محمد خاور قصاب ورغلا کر اسے اپنے موٹر سائیکل پر بٹھاکر گائوں کے باہر لے گیا اور اسلحہ کے زور پر قریبی فصلوں میں لے جاکر زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔ تھانہ سٹی دیپالپور نے مقدمہ درج کر لیا۔ پاکپتن سے نامہ نگار کے مطابق تھانہ ملکہ ہانس کے علاقہ56 ایس پی میں محنت کش ذوالفقار شیخ کی 14سالہ بیٹی (س) کھیت میں گھاس کاٹ رہی تھی گائوں کے زمیندار امجد نے اسے زبردستی اپنی ہوس کا نشانہ بنا ڈالا۔ لڑکی کی چیخ وپکار پر دیہاتیوں نے ملزم کو پکڑ کر پولیس کے حوالے کیا پولیس ملکہ ہانس نے متاثرہ لڑکی کا میڈیکل کرا کر ملزم کے خلاف مقدمہ درج کر لیا۔ بعدازاں مبینہ طور پر پولیس نے متاثرہ لڑکی کے باپ ذوالفقار کو حوالات میں بند کر دیا اور مقد مہ واپس لینے کے لئے دباو ڈالتے رہے انکار پر پولیس نے اُسے تشدد کا نشانہ بنا ڈالا۔ واقعہ کے خلاف اہل علاقہ نے شدید احتجاج کرتے ہوئے وزیراعلیٰ پنجاب سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا۔