ایک اور بچہ نالے میں ڈوب گیا،حکومت نالوں کو ڈھانپے

03 اگست 2015
ایک اور بچہ نالے میں ڈوب گیا،حکومت نالوں کو ڈھانپے

شادمان کے علاقہ میں محنت کش کا 6سالہ بچہ نالے میں ڈوب کر ہلاک ہو گیا۔ بچے کی ہلاکت پر ماں باپ غم سے نڈھال ہو گئے۔
حکومت پنجاب نے شہروں میں صفائی کے ٹھیکے غیر ملکیوں کو دے رکھے ہیںجبکہ ہر بڑی چھوٹی مارکیٹ، بازار میں فٹ پاتھوں پر قبضہ کرکے ایم پی ایز اور ایم این ایز نے اپنے حماتیوں کو پارکنگ کے ٹھیکے دے رکھے ہیں جس سے وہ عوام پر پارکنگ کے نام پر جگا ٹیکس وصول کرتے ہیں حالانکہ ایم پی ایز اور ایم این ایز کا کام اپنے شہریوں کی حفاظت بھی ہے جس سے وہ مکمل طور پر غافل ہیں۔ حکومت پنجاب نے 2سال میں شمع سے لیکر موڑ سمن آباد تک گندے نالے کو کور کرکے نہ صرف اس کے ساتھ دو رویہ سڑک بنائی ہے بلکہ نالے کو بھی کور کر دیا ہے۔ اگر ایم این ایز اور ایم پی ایز اسی طرح اپنے اپنے علاقوں میں گندے نالوں کو کور کرکے ان پر چھت ڈال دیں تو نہ صرف ان کی کارکردگی میں اضافہ ہو گا بلکہ معصوم بچے بھی ان نالوں میں گر کر موت کے منہ میں جانے سے بچ جائیں گے۔ وزیر اعلیٰ پنجاب اگر گندے نالے کور کرنے کی پالیسی کو اپنا لیں تو لاہور شہر کا حسن بھی دوبالا ہو جائے گا اور شہری بھی انہیں دعائیں دیں گے شادمان میں 6سالہ رضوان گندے نالے میں گر گیا جو قابل افسوس ہے خادم پنجاب اس کے والدین کی ڈھارس بندھائیں اور گندے نالے کور کرنے کا فی الفور حکم صادر کریں۔