اسرائیلی سکیورٹی کابینہ نے انتہا پسند یہودیوں کو انتظامی حراست میں رکھنے کی منظوری دیدی

03 اگست 2015

میڈرڈ (رائٹرز) اسرائیلی سکیورٹی کابینہ نے فلسطینیوں کے خلاف تشدد بھڑکانے میں ملوث یہودی انتہا پسندوں کو گرفتار کرنے‘ بغیر ٹرائل کے جیل میں ڈالنے کے بل کی منظوری دے دی۔ ذرائع کے مطابق انہیں انتظامی حراست میں رکھا جائے گا۔ یاد رہے انتہا پسند آبادکاروں کی جانب سے 18 ماہ کے فلسطینی بچے کو زندہ جلانے کے واقعہ کے بعد معاملہ عالمی سطح پر اٹھایا گیا تھا ۔ اس واقعہ میں دوما گاؤں کو بھی جلا دیا گیا تھا۔ ابھی تک کسی ملزم کو نہیں پکڑا گیا۔ ادھر علاقے میں انتقام لینے کے نعرے دیوار پر لکھے گئے ہیں۔ عموماً فلسطینیوں کو جیلوں میں رکھا جا تا ہے۔

آئین سے زیادتی

چلو ایک دن آئین سے سنگین زیادتی کے ملزم کو بھی چار بار نہیں تو ایک بار سزائے ...