پاکستان دہشت گرد نہیں!

02 جولائی 2009
اللہ تعالی ٰ جسے چاہتا ہے عزت دیتا ہے اور جسے چاہتا ہے ذلیل کرتا ہے یہ سب اس کے ہاتھ میں ہے (القرآن) 1992میں پاکستان ٹیم نے پوری قوم کو فتح کے ساتھ سرخرو کیا تھا۔ اس وقت بے شک پاکستان کو بہت سی اندرونی اور بیرونی مشکلات کا سامنا تھا لیکن جو مشکلات اس وقت تھیں آج کی موجودہ مشکلات مکمل طور پر مختلف ہیں۔ ان نامساعدات حالات میں بھی پاکستان نے سپورٹس کے میدان میں شاندار کامیابی حاصل کرکے پوری دنیا میں قوم کا سرفخر سے بلند کردیا تھا۔ بین الاقوامی طاقتیں پاکستان کو دہشت گردی کی زمین کی رٹ لگا رہی ہیں کیا یہ عظیم وطن جو خالصتاً کلمہ طیبہ کی بنیاد پر اور لاکھوں قربانیوں کے بعد دہشت گردی کی علامت بنانے کے لئے حاصل کیا گیا تھا؟ کیا یہ وطن عزیز دہشت گردوں کی زمین کے لئے حاصل کیا گیا تھا؟ کیا یہ ڈرون حملوں کے لئے حاصل کیا گیا تھا؟ کیا یہ غیر ملکی مداخلت کے لئے حاصل کیا گیا تھا؟ کیا یہ عظیم ایٹمی طاقت امریکہ کی خوشنودی کے لئے حاصل کیا گیا تھا؟ نہیں، ہرگز نہیں بلکہ یہ تو مسلمانوں کے لئے عظیم اسلامی لیبارٹری بنایا گیا تھا تاکہ یہاں کے لوگ قرآن وحدیث کے مطابق اپنی زندگی اسلامی ماڈل بنا سکیں اس اسلامی لیبارٹری کا اثر دیرپا ثابت ہورہا ہے کہ ہم پوری دنیا میں نہ صرف پرامن ایٹمی طاقت ہیں بلکہ کھیل میں بھی پاکستانی ورلڈ چیمپئن ہیں۔ اب دنیا والوں کو جان لینا چاہیے کہ ہماری کامیابیاں پرامن طور پر ہیں اور ہماری پہچان ورلڈ چیمپئن پاکستانی ہے نہ کہ دہشت گرد۔ رانا نذیر احمد گوجرہ ڈسکہ 0321-4178670