فوج کشمیر کی اصل جنگ چھوڑ کر دشمن کی جنگ لڑ رہی ہے: شیخ جمیل الرحمن

02 جولائی 2009
لاہور (خصوصی رپورٹر) تحریک المجاہدین جموں و کشمیر کے امیر و متحدہ جہاد کونسل کے جنرل سیکرٹری شیخ جمیل الرحمن نے کہا ہے کہ بھارت آبی جارحیت کر کے پاکستان کو ریگستان بنانا چاہتا ہے‘ حکومت قائداعظمؒ کی کشمیر پالیسی سے روگردانی کر رہی ہے‘ کشمیر کی حقیقی قیادت کی شمولیت اور کشمیر کومتنازعہ تسلیم کئے بغیرپاک بھارت مذاکرات بے فائدہ ہونگے‘ کشمیر جہاد سے آزاد ہوگا‘ بھارت کشمیریوں کی تحریک آزادی کودبانے کیلئے اسرائیلی کمانڈوز کی خدمات حاصل کر چکا ہے اور اس مقصد کیلئے اسرائیلی تربیت یافتہ سپیشل فورس تیار کی جا رہی ہے‘ پاک فوج کشمیر کی اصل جنگ چھوڑ کر دشمن کی جنگ لڑ رہی ہے ‘ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز ایوان وقت میں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ ان کے ہمراہ کشمیری کمانڈر شفیق الرحمن اور محمد مشتاق میر بھی تھے۔ قبل ازیں انہوں نے ایڈیٹر انچیف نوائے وقت گروپ مجید نظامی سے ان کے دفتر میں ملاقات کی۔ شیخ جمیل الرحمن نے کہا کہ ہم 62 سال سے تکمیل پاکستان کی جنگ لڑ رہے ہیں مگر پاکستانی عوام کی طرح حکمرانوں نے ہماری مدد کا فریضہ صحیح طور پر ادا نہیں کیا۔جنرل مشرف اور آصف علی زرداری کی کشمیر پالیسی میں کوئی فرق نہیں ہے ، حکمرانوں کا یہ کہنا کہ پاکستان کو بھارت سے کوئی خطرہ نہیں‘ احمقانہ سوچ کی عکاسی ہے۔ آخر میں انہوں نے ادارہ نوائے وقت کی کشمیر پالیسی کو سراہا اور مجید نظامی کی کشمیریوں سے محبت‘ حب الوطنی‘ جہاد اور اسلام پسندی کی تعریف کی۔