A PHP Error was encountered

Severity: Notice

Message: Undefined index: category_data

Filename: frontend_ver3/Templating_engine.php

Line Number: 35

خیبر ایجنسی میں بھی آپریشن‘ کمانڈر منگل باغ 28 ساتھیوں سمیت جاں بحق

02 جولائی 2009
پارہ چنار + خیبر ایجنسی + سوات (مانیٹرنگ نیوز + ریڈیو مانیٹرنگ + ایجنسیاں) سکیورٹی فورسز کی خیبر ایجنسی کے علاقے تیراہ میں بڑی کارروائی کے دوران کمانڈر منگل باغ سمیت 28 عسکریت پسند جاںبحق اور ان کی 5 گاڑیاں تباہ ہو گئیں۔ کرم ایجنسی میں متحارب گروپوں نے فائر بندی کا اعلان کر دیا جبکہ شمالی وزیرستان میں گن شپ ہیلی کاپٹروں کی کار پر فائرنگ سے 5 افراد جاں بحق اور 3 زخمی ہو گئے۔ کرم ایجنسی میں لشکر کے ساتھ لڑائی میں مزید 38 شدت پسندوں سمیت 45 افراد جاںبحق‘ 64 زخمی ہو گئے جبکہ خیبر ایجنسی کی تحصیل جمرود میں حکومت کے حمایتی قبائلی رہنما گل شاہ قاتلانہ حملے میں ڈرائیور اور دو باڈی گارڈز کے ساتھ قتل ہو گئے۔ آئی ایس پی آر کے مطابق فورسز نے شدت پسندوں کے اہم ٹھکانے شاہ ڈھیری کا کنٹرول سنبھال لیا اور آپریشن راہ راست میں گذشتہ 24 گھنٹوں میں 5 عسکریت پسند اور ایک سکیورٹی اہلکار جاںبحق اور 12 افراد زخمی ہو گئے جبکہ دیر میں جھڑپوں میں قبائلی عمائدین کے 22 افراد زخمی ہو گئے۔ مالاکنڈ اور دیر میں گولہ باری جاری ہے۔ باجوڑ میں شدت پسندوں نے پرائمری سکول کو دھماکہ خیز مواد سے اڑا دیا۔ نوشہرہ میں راکٹ گرنے سے فوجی یونٹ میں کام کرنے والے 2 خاکروب مارے گئے اور 2 زخمی ہو گئے۔ دیربالا میں شدت پسند کمانڈر کا گھر جلانے والے قومی لشکر پر شدت پسندوں نے حملہ کر دیا جس سے لشکر کے 2 افراد جاںبحق‘ 4 زخمی ہو گئے۔ قبائلی سردار گل شاہ ڈرائیور اور باڈی گارڈ کے ساتھ گھر سے پشاور جا رہے تھے کہ سفید گاڑی میں سوار افراد نے ان پر فائرنگ کر دی‘ گل شاہ آفریدی پر اس سے قبل بھی تین بار حملے ہوچکے ہیں۔ خبر پھیلتے ہی سینکڑوں افراد موقع واردات پر پہنچ گئے جبکہ علاقے میں شدید فائرنگ کی گئی۔ لوگوں نے احتجاجاً پاک افغان شاہراہ بند کر دی اور ٹریفک معطل ہو گئی‘ مہمند ایجنسی میں فورسز کے چھاپوں کے دوران 18 مشتبہ افراد گرفتار ہوئے جبکہ یہاں جیٹ طیاروں نے بھی پروازیں کیں اور ایک ملک کا گھر مسمار کر دیا گیا۔ یہاں لشکر نے عسکریت پسندوں سے بھاری مقدار میں ہتھیار قبضے میں لے لئے اور شدت پسندوں کے 2 گھروں کو بھی نذر آتش کر دیا۔