A PHP Error was encountered

Severity: Notice

Message: Undefined index: category_data

Filename: frontend_ver3/Templating_engine.php

Line Number: 35

تیل کی قیمتوں میں کمی کیلئے پنجاب اسمبلی میں قرارداد لانے کا فیصلہ

02 جولائی 2009
لاہور (نیوز رپورٹر + خصوصی رپورٹر + سٹاف رپورٹر) پٹرول کی قیمتیں وفاقی حکومت سے کم کرانے کیلئے پنجاب اسمبلی میں قرارداد لانے کا فیصلہ کیا گیا ہے جبکہ جماعت اسلامی نے کل (3 جولائی) سے تحریک چلانے کا اعلان کیا ہے۔ ادھر آل پاکستان ٹرانسپورٹ اونرز فیڈریشن نے دوسری ٹرانسپورٹ تنظیموں سے مل کر ملک گیر پہیہ جام ہڑتال کی دھمکی دیدی ہے۔ پنجاب اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر قانون رانا ثناء اللہ خان نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے پر ناراضگی کا اظہار کیا اور کہا کہ وفاقی حکومت سے قیمتوں میں کمی کی سفارش کیلئے پنجاب اسمبلی میں قرارداد لائی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ سے عام آدمی متاثر ہو گا تاہم حکومت نے بھی یہ کام شوق سے نہیں کیا ہو گا تاہم حکومت سے قیمتیں کم کرانے کیلئے راجہ ریاض‘ میاں عطا مانیکا اور اعجاز شفیع مل کر قرارداد لائیں گے جو ہمارا جمہوری حق ہے۔ عطا مانیکا نے پوائنٹ آف آرڈر پر کہا کہ حکمرانوں نے سپریم کورٹ کے حکم کی بھی دھجیاں بکھیر دی ہیں۔ پٹرولیم مصنوعات کی ایسی صورتحال تو صومالیہ میں بھی نہیں تھی۔ انہوں نے کہا کہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں بڑھا کر سی این جی سے وابستہ افراد کو فائدہ پہنچانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ میرا مطالبہ ہے کہ خوابوں کی دنیا سے باہر نکلا جائے کیونکہ ہم نے عوام کے پاس بھی جانا ہے۔ جواب میں سینئر وزیر راجہ ریاض نے کہا کہ عالمی منڈی میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کی وجہ سے حکومت نے مجبوراً اضافہ کیا ہے۔ اپوزیشن رکن اسمبلی اعجاز شفیع نے نکتہ اعتراض پر کہا کہ وفاقی حکومت نے مالی سال کے پہلے روز قوم کو پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کا جو تحفہ دیا ہے اس کی ہم شدید مذمت کرتے ہیں۔ جب عالمی مارکیٹ میں قیمتیں کم ہو رہی ہیں تو حکومت پاکستان کیوں اضافہ کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت اپنی عیاشیوں کو کم نہیں کر رہی۔ اپوزیشن خواتین اراکین اسمبلی ماجدہ زیدی،خدیجہ عمر اور سیمل کامران نے اپنے مشترکہ بیان میں کہا کہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ظالمانہ اضافہ بجلی بم کے بعدعوام پرپٹرول بم حملہ ہے۔ \\\"روٹی کپڑا مکان\\\" دینے کا وعدہ کرنے والی جماعت عوام کی کھال اتارنے لگی ہے۔ اس اضافہ کے ذریعے عوام سے سانس لینے کا حق بھی چھین لیا گیا ہے۔ مسلم لیگ (ن) عوام کے مفاد کا خیال رکھنے کی بجائے اپنے اقتدار کو بچانے پر توانائیاں صرف کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ عوام حکومت کی عیاشیوں کیلئے اس کی مزید خوراک نہیں بن سکتے۔گزشتہ روز منور حسن کی زیر صدارت جماعت اسلامی کی مرکزی مشاورتی کمیٹی میں فیصلہ کیا گیا کہ کل سے لوڈشیڈنگ، پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ظالمانہ اضافے اور مہنگائی و بدامنی کے خلاف ملک گیر احتجاجی تحریک شروع کرتے ہوئے لاہور سمیت تمام ضلعی ہیڈکوارٹرز میں احتجاجی مظاہرے اور ریلیاں منعقد کی جائیں گی۔ لیاقت بلوچ تحریک کے مرکزی کوارڈینیٹر ہوں گے۔ اس موقع پر منورحسن نے عوام سے احتجاجی تحریک میں بھرپور شرکت کی اپیل کی۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ عوامی مسائل کے حل سے حکومتی لاتعلقی نے غریب آدمی کا جینا دوبھر کردیا ہے۔ بجلی کی قیمتوں میں اضافے کو عارضی طو پر مؤخر کر کے عوام پر پٹرول بم گرادیا گیا ہے۔ عالمی منڈی میں ابھی بھی تیل کی قیمتیں کم تر سطح پر ہیں لیکن کمیشن مافیاملٹی نیشنل کمپنیوں کے ہاتھوں یرغمال بنا ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ عوام کو اپنے مسائل کے حل کے لیے سڑکوں پر نکلنا ہوگا اور احتجاج کرکے اپنے حقوق لینے ہوں گے۔ ایک بیان میں نائب امیر جماعت اسلامی سینیٹر پروفیسر خورشید احمد نے پٹرولیم مصنوعات اور بجلی کی قیمتوں میں بے تحاشا اضافہ کو عوام دشمن اقدام قرار دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے ملکی صورتحال اور ضروریات کو مدنظر رکھنے کی بجائے بیرونی دبائو کے تحت سبسڈی ختم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔