آئی ایم ایف کو ادائیگی کرینگے‘ کوئی خطرہ درپیش نہیں: گورنر سٹیٹ بینک

01 جون 2012
کراچی (کامرس رپورٹر) گورنر سٹیٹ بنک یٰسین انور نے کہا ہے کہ پاکستان کو (آئی ایم ایف) کو ادائیگی کے حوالے سے کسی خطرے کا سامنا نہیں ہوگا۔ 29 مئی 2012ءکو وال سٹریٹ جرنل میں شائع ہونے والی خبر کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ہمارے زرمبادلہ کے ذخائر کافی ہیں۔ اگلے سال آئی ایم ایف کو ادائیگی کرنے میں ہمیں کوئی خطرہ درپیش نہیں۔ ترسیلات، جو رواں مالی سال 13 ارب ڈالر سے تجاوز کرجائیں گی، میں اضافے اور متوقع اضافی بیرونی براہ راست سرمایہ کاری (FDI) بشمول بجلی کے شعبے میں امریکی کمپنیوں کی سرمایہ کاری سے ذخائر میں کمی کا اثر جزوی طور پر زائل ہوجائے گا۔ نئے غیر ملکی بینکوں کی آمد، روزگار بڑھانے کے لیے چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروبار کے قرضوں میں اضافہ، زرعی شعبے کے امکانات اور دنیا میں چوتھے سب سے زیادہ دودھ پیدا کرنے والے ملک کی حیثیت سے ڈیری کی مصنوعات کی برآمد کے زبردست امکانات اور ہا¶سنگ فنانس کو تقویت دینے کے لےے سرمایہ منڈیوں کی تشکیل ملکی معیشت کے مثبت پہلو ہیں۔ پاکستان کی موجودہ بینکاری تشکیل نو اور ہماری کامیاب بلادفتر بینکاری حکمت عملی ”بینکاری سے محروم“ طبقات کو بینکاری کے دائرے میں لارہی ہے جس سے مالی شمولیت میں اضافہ ہورہا ہے۔