کراچی میں ٹارگٹ کلنگ کا سلسلہ بدستور جاری

01 جون 2012
کراچی (کرائم رپورٹر) کراچی میں ٹارگٹ کلنگ کا سلسلہ بدستور جاری، جمعرات کو بھی فائرنگ و تشدد کے واقعات میں رینجرز کے سب انسپکٹر اور میاں بیوی اور بچی سمیت مزید 12 افراد جاں بحق اور 5 افراد زخمی ہو گئے۔ رینجرز کے سب انسپکٹر عبدالحمید چاچڑ کو مدینہ کالونی میں اس کے گھر کے نزدیک فائرنگ کا نشانہ بنایا گیا۔ وہ پانچ بچوں کا باپ تھا، پاک کالونی میں لیاری ندی سے ایک شخص کی ہاتھ پاﺅں بندھی نعش ملی جسے تشدد کے بعد ہلاک کیا گیا۔ ماڑی پور کے علاقے میں نامعلوم افراد نے 24 سالہ نوجوان، لی مارکیٹ میں 28 سالہ نوجوان کو فائرنگ کرکے ہلاک کردیا۔ ادھر کورنگی میں موٹر سائیکل سواروں نے گھر کے باہر بیٹھے ہوئے ٹریول ایجنٹ اسد حسین کو فائرنگ کرکے جاں بحق کر ڈالا۔ جبکہ شاہ لطیف ٹاﺅن کے علاقے مدینہ کالونی میں ریلوے لائن کے قریب مکان سے میاں بیوی اور ان کی اڑھائی سالہ بیٹی کی نعشیں ملیں جنہیں تشدد اور اینٹ سے سر کچل کر ہلاک کیا گیا تھا۔ محمد سہیل بہاولپور اس کی بیوی شہناز کا تعلق ملتان سے تھا۔دریں اثناءبی بی سی کے مطابق کراچی میں ایک ماہ میں 200 افراد ہلاک ہو گئے۔ وزارت داخلہ سندھ کے ترجمان کے مطابق یکم مئی سے 27 مئی تک ہدف بنا کر قتل کئے جانے والے افراد کی تعداد 163 ہے جن میں متحدہ کے 15، پی پی کے 4، اے این پی کے 2 اور پولیس کے 5 اہلکار شامل ہیں۔دریں اثناءناظم آباد میں نامعلوم افراد کی کار پر فائرنگ سے 3 افراد جاں بحق، ایک شخص زخمی ہو گیا۔