اے این ایف والے ثبوت نہیں لاتے، بدنام عدالتوں کو کیا جاتا ہے: چیف جسٹس

01 جون 2012
اسلام آباد (نوائے وقت نیوز) سپریم کورٹ میں منشیات کیس کے ایک ملزم کیخلاف اے این ایف کی اپیل پر سماعت ہوئی۔ کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس افتخار محمد چودھری نے ریمارکس دئیے اے این ایف والے ثبوت نہیں لاتے۔ ملزم رہا ہو تو الزام عدالتوں پر لگایا جاتا ہے۔ دھماکہ خیز مواد اور چرس کے ثبوت نہیں لاتے۔ بدنام عدالتوں کو کیا جاتا ہے۔ اے این ایف نے ملزم فہیم بابر کی بریت کیخلاف دائر اپیل واپس لینے کی درخواست دی۔ سپریم کورٹ نے درخواست مسترد کردی۔ عدالت نے اپیل دائر کرنے کا حکم دینے والی اتھارٹی کو طلب کرلیا۔ چیف جسٹس نے کہا کہ بغیر ثبوت اپیل دائر کرانیوالی اتھارٹی کو یہاں لیکر آئیں۔