اندیشہ

01 اپریل 2018

ترا اندیشہ اَفلاکی نہیں ہے
تری پرواز لَولاکی نہیں ہے
یہ مانا اصل شاہینی ہے تیری
تری آنکھوں میں بے باکی نہیں ہے
(بالِ جبریل)