بیماریوں سے بچاؤ کی پالیسیاں مرتب کرنا ہونگی : مقررین

01 اپریل 2018

لاہور(نیوزرپورٹر)پاکستان اسلامک میڈیکل ایسوسی ایشن (پیما) کے دو روزہ بین الاقوامی کنونشن کاآغاز ایوان اقبال میں ہو گیا ہے جس میں ملک بھر سے خواتین سمیت ڈاکٹرز کی بڑی تعداد شرکت کر رہی ہے۔ اس موقع پر پیما کی جانب سے مثالی ہسپتال، فارما کے ساتھ تعلقات اور علاج معالجے کے سلسلے میں گائیڈ لائینز کا بھی اجراء کیا گیا۔پہلے روز مختلف طبی موضوعات پر سایئنٹیفک سیشنز کا بھی انعقاد کیا گیا۔ مقررین کا کہنا تھا کہ مریض صرف دوا کا نہیں بلکہ ڈاکٹر کے اچھے برتاؤ کا بھی استحقاق رکھتا ہے۔ پاکستان میں صحت عامہ کی صورتحال بہتر بنانے کے لیے حکومت سطح پر بیماریوں سے بچاؤ کی پالیسیاں مرتب کرنا ہوں گی۔ کنونشن کے افتتاحی سیشن کی صدارت پروفیسر خواجہ صادق حسین نے کی۔ انہوں نے کہا کہ مریض کی خدمت عبادت ہے، اس میں کوتاہی اپنے آپ کو انسانیت کے درجے سے گرانے کے مترادف ہے۔ فیڈریشن آف اسلامک میڈیکل ایسوسی ایشنز کے مرکزی صدر ترکی کے ڈاکٹر احسان کرامان نے غزہ، شام اور روہنگیا میں فیماکی طبی خدمات پر روشنی ڈالی۔ پیما کے صدر ڈاکٹر عبدالمالک نے کہا کہ پیما کا بنیادی مقصد ڈاکٹرز کی پیشہ ورانہ استعداد میں اضافے کے ساتھ ساتھ انہیں مسلمان ڈاکٹر کے طور پر ان کی ذمہ داریوں سے آگاہ کرنا بھی ہے۔ پروفیسر سعیدااختر نے کہا کہ پاکستان ہیپاٹائٹس سی کے مریضوں کی تعداد والا دوسرا بڑا ملک ہے۔ کنونشن سے پروفیسر علی مشعال (اردن)، پروفیسر موسیٰ نور الدین (ملائیشیا)، پروفیسر انیس احمد (رفاہ یونیورسٹی)، ڈاکٹر نعیم ظفر، پروفیسر اشتیاق احمد گوندل، پروفیسر حافظ اعجاز احمد، پروفیسر حفیظ الرحمن، ڈاکٹر محمد افضل میاں، ڈاکٹر مصباح العزیز اور ڈاکٹر تنویر الحسن زبیری نے بھی خطاب کیا۔