فنکشنل لیگی رہنمائوں کا پولیس حکام کیخلاف احتجاج

01 اپریل 2018

حیدر آباد (نامہ نگار) مسلم لیگ فنکشنل کے رہنماء چوہدری نظام آرائیں نے چیف جسٹس‘ آئی جی سندھ‘ ڈی آئی جی حیدر آباد اور دیگر اعلیٰ حکام سے اپیل کی ہے کہ حیدر آباد میں کاروباری طبقے کو ہراساں کرنے والے پولیس افسر ظفر چانڈیو کے خلاف تحقیقات کی جائے اور ان کی شہریوں سے کی جانے والی لوٹ مار کو بے نقاب کیا جائے یہ مطالبہ انہوں نے حیدر آباد پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ان کے ہمراہ پیپلز پارٹی کے رہنماء امان اللہ سیال‘ زبیر میمن و دیگر بھی موجود تھے۔ انہوں نے کہاکہ ایس ایس پی حیدر آباد کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ ایماندار ہیں لیکن ان کے پی ایس او‘ اے ایس آئی ظفر چانڈیو نے پورے شہر میں لوٹ مار کا سلسلہ شروع کر رکھا ہے مین پوری‘ گٹکے پر پابندی کی آڑ میں ظفر چانڈیو کاروباری طبقے کو ہراساں کر رہا ہے کچھ عرصہ قبل ظفر چانڈیو نے حاجی محمد اقبال آرائیں کے گودام پر چھاپہ مارا اور وہاں سے چینی‘ چاول‘ چھوہارے اور دیگر سامان ٹرک میں بھر کر لے گیا۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ صورتحال کا فوری نوٹس لیا جائے ورنہ سندھ اسمبلی میں قرارداد پیش کی جائے گی۔ دوسری جانب حیدر آباد پولیس کے ترجمان نے چوہدری نظام آرائیں کی پریس کانفرنس کو جھوٹ کا پلندہ قرار دیا ہے۔
پولیس کے خلاف احتجاج

نفس کا امتحان

جنسی طور پر ہراساں کرنے کے خلاف خواتین کی مہم ’می ٹو‘ کا آغاز اکتوبر دو ...