سپریم کورٹ کا ڈاکٹروں کی ترقی کا عمل ایک ماہ میں مکمل کرنے کا حکم

01 اپریل 2018

کراچی (وقائع نگار) سپریم کورٹ نے ڈاکٹروں کی تعیناتی و ترقی سے متعلق نیا سروس اسٹرکچر بناکر ڈاکٹروں کی ترقی کا عمل ایک ماہ میں مکمل کرنے کا حکم دیدیا۔ سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں تین رکنی بنچ کے روبرو ڈاکٹروں کی تعیناتی و ترقی سے متعلق سماعت ہوئی۔ ڈاکٹروں نے موقف اختیار کیا کہ ڈاکٹروں کی مدت ملازمت کے لحاظ سے سروس اسٹرکچر بنایا جائے۔ ایڈہوکیٹ جنرل سندھ نے عدالت کو بتایا عدالتی حکم کے مطابق کنٹریکٹ ڈاکٹروں کو ریگولرائز کیا جارہا ہے‘ 300 ڈاکٹروں کی ریگولرائزیشن کا عمل باقی ہے‘ ڈاکٹروں کے نئے سروس اسٹرکچر کیلئے کمیٹی بنا رہے ہیں۔ عدالت میں موجود ڈاکٹروں نے کہاکہ ترقی کے انتظار میں برسوں گزر گئے‘کئی ڈاکٹرز انتقال کرگئے۔ ایڈووکیٹ جنرل سندھ ضمیر گھمرو نے سلیکشن بورڈ کے اجلاس میں گریڈ 17سے 19کے ڈاکٹروں کی ترقی کی منظوری کے حوالے سے رپورٹ پیش کر دی۔ رپورٹ کے مطابق گریڈ 17 سے 18 میں 50 ڈاکٹروں کی ترقی کی منظوری دی گئی۔ گریڈ 18سے 19 میں 33 ڈاکٹروں کی ترقی کی منظوری دی گئی۔ گریڈ 19سے 20 میں 133 ڈاکٹروں کو ترقی دی گئی۔

EXIT کی تلاش

خدا کو جان دینی ہے۔ جھوٹ لکھنے سے خوف آتا ہے۔ برملا یہ اعتراف کرنے میں لہٰذا ...