پاکستان میں جمہوریت اور اس کامستقبل

01 اپریل 2018

پاکستان کو قائم ہوئے تقریباً 70 برس ہوگئے ہیں لیکن اس ملک میں جمہوریت آج تک مستحکم نہیں سکی۔ جمہوریت کو ہمیشہ خطرات لاحق رہے ہیں۔ غیر جمہوری قوتوں نے متعدد بار جمہوریت پر شب و خون مارا ہے۔ آئین کو پامال کیا گیا اور جمہوریت کی بساط لپیٹی جاتی رہی جس کی وجہ سے آج بھی جمہوریت کے مستقبل کے حوالے سے سوالات اٹھائے جاتے ہیں۔ ایک اندازے کے مطابق پاکستان بننے سے آج تک یعنی تقریباً 70 سال میں سے آدھے سے زیادہ عرصہ اس ملک پر غیر جمہوری قوتوں نے حکمرانی کی ہے۔ دس بارہ سال تک مسلسل غیر جمہوری قوتوں نے حکمرانی کی ہے۔ دس بارہ سال تک مسلسل غیر جمہوری قوتوں کے اقتدار میں رہنے کے بعد جب عوام اور ان کی مقبولیت کا گراف گرنے لگتا ہے تو مجبوری یا اندرونی اور بیرونی دباﺅ کے نتیجے میں جمہوری قوتوں کو بار دی جاتی ہے لیکن باری بھی اس طرح دی جاتی رہی ہے کہ سوائے ایک دو جمہوری اور منتخب حکومتوں کے کسی کو بھی پانچ سال کی مدت پوری کرنے نہیں دی گئی جس سے ا ایک نقصان تو یہی ہوتا رہا ہے کہ جمہوری حکومتوں کی پالیسیوں کا تسلسل ختم ہوجاتا ہے۔ ملکی ترقی اور عوامی بھلای کے جوبڑے اور اہم منصوبے جمہوری حکومتوں نے شروع کئے ہوئے ہوتے ہیں غیر جمہوری قوتیں اقتدار میں آتے ہی ان منصوبوں کو یا تو بند کردیتی ہے یا پھر ان پر توجہ دینے کے بجائے ان کی جگہ پر نئے منصوبے شروع کردیتی ہے۔ اسی طرح ملک کا دوسرا نقصان یہ ہوتا رہا ہے کہ جمہوریت غیر مستحکم ہوتی رہی ہے یہاں یہ الگ بات ہے کہ غیر جمہوری قوتوں کو اقتدار پر قبضہ کرنے کے موقع بھی خود جمہوری اور سیاسی جماعتیں ہی فراہم کرتی رہی ہیں کیوں کہ خود ہماری جمہوری اور سیاسی قوتیں بھی ایک دوسرے کے خلاف سازشیں کر کے جمہوریت کو نقصان پہچانے میں کوئی کسر نہیں چھوڑتیں۔غیر جمہوری قوتوں کو اقتدار پر قبضہ کرانے میں ہمارے منتخب نمائندوں اور جمہوری حکمرانوں کی کرپشن اور بیڈ گورنر کا بھی اہم کردار رہا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ متعدد منتخب اور جمہوری حکومتیں کرپشن اور دیگر اسی طرح کے الزامات کی بنیاد پر ہی ختم کی جاتی رہی ہیں۔ آج ہمارے ملک میں جمہوریت تو بحال ہے لیکن جمہوریت پر خطرات ہر وقت منڈلا تے رہتے ہیں۔ جمہوریت کے لئے ہر وقت اس غیر یقینی کی صورتحال کو ختم کرنے کے لئے ہماری سیاسی اور جمہوری قوتوں سمیت اصل مقتدر قوتوں کو مل کر سنجیدگی سے سوچنا ہوگا اور اقدامات بھی کرنے ہوں گے۔(پرویز عالم،کورنگی )کراچی