منیٰ میں پاکستانی عازمین حج کیلئے خیموں کی کمی، کھلے آسمان تلے بیٹھنے پر مجبور

طائف (ممتاز احمد بڈانی) گذشتہ سال کی طرح امسال بھی بعض پاکستانی عازمین حج کو منیٰ میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ گورنمنٹ سکیم کے تحت آنے والے کوئٹہ، گلگت بلتستان اور دیگر علاقوں کے عازمین حج نے نوائے وقت اور وقت نیوز کو بتایا کہ ہمارے عازمین کی تعداد 3000کے لگ بھگ ہے ہمیں جو خیمے دئیے گئے تھے وہ پاکستان کی نجی کمپنیوں کے حجاج کو الاٹ کئے گئے ہیں ہم سب فیملی کے ساتھ کھلے آسمان تلے بیٹھنے پر مجبور ہیں۔ حجاج نے مکتب نمبر 85کے ذمہ دار کا گھیراﺅ کیا جس پر وہ فرار ہوگیا۔ ان حجاج کا کہنا ہے کہ بے یارومددگار بیٹھے ہیں۔ کوئی اہلکار ہماری بات سننے کو تیار نہیں۔ منیٰ میں پاکستانیوں کو جو خیمے فراہم کئے گئے ہیں وہ سہولتوں سے محروم ہیں اور ایک ایک خیمے میں گنجائش سے زیادہ افراد کو ٹھہرایا جا رہا ہے۔ ان میں سہولتیں غائب ہیں، گنجائش سے زیادہ افراد کو ایک خیمے میں جگہ دئیے جانے کے باعث عازمین حج ایک دوسرے سے لڑ پڑے بہت سے عازمین سڑکوں پر پلوں پر رہنے پر مجبور ہو گئے۔ عازم حج محمد علی نے بتایا کہ خیموں میں پانی کا کوئی انتظام نہیں۔