سپر لیگ پاکستان میں کرائی جائے: محمد الیاس، متحدہ عرب امارات میں ہو گی: شکیل شیخ ، علی ضیا

لاہور (نمائندہ سپورٹس/سپورٹس رپورٹر) سابق چیف سلیکٹر محمد الیاس کا کہنا ہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ سپرلیگ کے پاکستان میں انعقاد پر توجہ دے۔ متحدہ عرب امارات میں سپرلیگ کے انعقاد کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔ لوگ پاکستان میں کرکٹ دیکھنا چاہتے ہیں۔ زمبابوے کے کامیاب دورہ پاکستان کے بعد ہمارا کیس بھی مضبوط ہے۔ کرکٹ بورڈ کے معاملات پر نظر دوڑائی جائے تو اس لیگ کا انعقاد بھی مشکل نظر آتا ہے۔ پی سی بی گورننگ بورڈ کے رکن اور کرکٹ کمیٹی کے چیئرمین شکیل شیخ کا کہنا تھا کہ ایک پرائیویٹ کمپنی نے دنیا بھر کے کھلاڑیوں سے بات چیت کرکے رپورٹ مرتب کی ہے۔ متحدہ عرب امارات میں آ کر کھیلنے پر کسی کو اعتراض نہیں ہے۔ سپرلیگ کے پہلے مرحلے پر یو اے ای میں ہر ٹیم میں چار پانچ غیرملکی کھلاڑی شامل ہونگے۔ دوسرے ایڈیشن میں اس کے پاکستان میں انعقاد کی امید بھی ہے۔ پاکستان ٹیم کا سری لنکا میں آغاز اچھا ہے۔ جونیئر سلیکشن کمیٹی کے رکن علی ضیاء کا کہنا تھا کہ ٹیسٹ ٹیم کی اچھی کارکردگی کی بنیادی وجہ یہی ہے کہ اکثر کھلاڑی تجربہ کار ہیں۔ پاکستان سپرلیگ کے حوالے سے کہنا تھا کہ متحدہ عرب امارات میں ان میچز کے انعقاد کا فیصلہ درست ہے۔ پاکستان سپرلیگ کیلئے دیگر شہروں میں بھی مقابلے کروانا پڑیں گے۔ اس لئے یہ مشکل ثابت ہو سکتا ہے