پی سی بی کسی کی جاگیر نہیں‘ صدر جب کہیں گے عہدہ چھوڑ دوں گا : اعجاز بٹ

لاہور(سپورٹس رپورٹر) پاکستان کرکٹ بورڈ کسی کی جاگیر نہیں صدر جب کہیں گے عہدہ چھوڑ دوں گا۔ آئی پی ایل میں پاکستانی کھلاڑیوں کو شامل نہ کیے جانے پر آئی سی سی سے احتجاج نہیں کر سکتے تاہم حکومتی سطح پر بات ضرور ہو رہی ہے کیونکہ یہ معاملہ اب کرکٹ بورڈز کا نہیں رہا ہے۔ 2010ءکیلئے کھلاڑیوں کے سنٹرل کنٹریکٹ کو حتمی شکل دیدی ہے جلد اعلان کر دیا جائیگا۔ ان خیالات کا اظہار پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین اعجاز بٹ نے میڈیا سے گفتگو میں کیا۔ انہوں نے کہا کہ وزیر کھیل نے آئی پی ایل حکام کے نمبر مانگے تھے جو انہیں مہیا کر دیئے گئے ہیں۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا آئی پی ایل کا معاملہ آئی سی سی اور بھارتی کرکٹ بورڈ کے درمیان ہے ہم اس پر احتجاج کرنے کے مجاز نہیں ہیں۔ آئی سی سی صرف کھلاڑیوں کو اجازت دے سکتی ہے کہ وہ کس ایونٹ میں شریک ہو سکتے ہیں اور کس میں نہیں۔ جیسے کہ آئی سی ایل کا آغاز ہوا تھا ۔ اعجاز بٹ نے کہا کہ پاکستانی کھلاڑیوں کو آئی پی ایل میں شامل نہ کرنا للت مودی کے ناروا سلوک کی عکاسی کرتا ہے۔ انہوں نے کہا قائمہ کمیٹی برائے کھیل کی جانب سے استعمال کی جانے والے نازیبا الفاظ پر اگر کوئی سابق ٹیسٹ کرکٹر اپنی رائے کا استعمال کرتا ہے تو وہ اس کیلئے آزاد ہے ہم کسی کو بیان بازی سے نہیں روک سکتے۔ محمد الیاس کی رائے کو بورڈ سے نہیں جوڑا جا سکتا وہ اپنی رائے دینے کا حق محفوظ رکھتا ہے۔ چیئرمین پی سی بی اعجاز بٹ نے کہا آئی سی سی صدر ڈیوڈ مورگن کی جانب سے پاکستان بھارت سیریز کے حوالے سے بیان اس بات کی عکاسی کرتا ہے کہ اس سیریز کی کتنی اہمیت ہے۔ انہوں نے کہا اب یہ کہنا کہ دونوں ممالک کے درمیان کرکٹ ڈیڈ لاک کب ختم ہوگا اس بارے میں کہنا قبل از وقت ہے۔